انتظامیہ غائب، سستے بازاروں میں مہنگائی کا طوفان، شہری خالی ہاتھ واپس

    انتظامیہ غائب، سستے بازاروں میں مہنگائی کا طوفان، شہری خالی ہاتھ واپس

  

          ملتان(سپیشل رپورٹر)وفاق اور صوبے میں سیاسی عدم استحکام کے نتیجہ میں ضلعی انتظامیہ اور مارکیٹ کمیٹی کی ناقص مانیٹرنگ کے باعث سستے بازاروں میں مہنگی اشیاء خوردونوش کی فروخت کا سلسلہ عروج پر پہنچ گیا،دکاندار مارکیٹ کمیٹی کا سرکاری نرخنامہ نظر انداز کرکے من پسند نرخوں پر پھل سبزیاں ودیگر اشیاء خوردونوش فروخت کرنے لگے پرائس کنٹرول مجسٹریٹوں نے سستے بازاروں میں نرخ نامے چیک کرنا (بقیہ نمبر9صفحہ6پر)

چھوڑ دیا۔پاکستان سروے کے مطابق حکومت پنجاب کی ہدایت پر شہریوں کو سستی اشیاء خوردونوش، سبزیوں پھلوں اور گوشت کی مارکیٹ سے کم نرخوں پر فراہمی یقنی بنانے کیلئے ملتان شہر میں پانچ مقامات جن میں شمس آباد،ولائت آباد،گول باغ،مدنی چوک اور ممتازآباد میں ضلعی انتظامیہ اور مارکیٹ کمیٹی کی جانب سے سستے بازار قائم کئے گئے ہیں جہاں شہریوں کو مارکیٹ کمیٹی کے سرکاری نرخنامے کے مطابق اشیاء خوردونوش کی فراہمی یقینی بنانے کیلئے متعلقہ محکموں کے افسران کی ڈیوٹیاں لگائی گئی ہیں مگر سیاسی عدم استحکام کے باعث ضلعی انتظامیہ،مارکیٹ کمیٹی سمیت متعلقہ محکموں کے افسران کی غفلت اور ناقص مانیٹرنگ کے باعث سستے بازاروں میں مہنگی اشیاء خوردونوش کی فروخت کا سلسلہ عروج پر پہنچ گیاہے سستا بازاروں کے دکاندار مارکیٹ کمیٹی کا سرکاری نرخنامہ نظر انداز کرکے من پسند نرخوں پر پھل سبزیاں ودیگر اشیاء خوردونوش فروخت کرنے میں مصروف نظر آتے ہیں جبکہ پرائس کنٹرول مجسٹریٹوں نے سستے بازاروں میں نرخ نامے چیک کرنا چھوڑ دیاجس سے سستا بازاروں میں گراں فروشی کو تقویت ملی ہے اس ضمن میں متاثرہ شہریوں نے حکومتی ارباب اختیار سے مذکورہ صوتحال بارے فوری اصلا ح احوال کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -