تحریک انصاف کا قومی اسمبلی سے مستعفی ہونے کا اعلان لیکن استعفے ووٹنگ کے بعد دیئے جائیں گے یا پہلے ؟ جانئے

تحریک انصاف کا قومی اسمبلی سے مستعفی ہونے کا اعلان لیکن استعفے ووٹنگ کے بعد ...
تحریک انصاف کا قومی اسمبلی سے مستعفی ہونے کا اعلان لیکن استعفے ووٹنگ کے بعد دیئے جائیں گے یا پہلے ؟ جانئے

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )سابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں پارٹی نے قومی اسمبلی سے استعفیٰ دینے کا فیصلہ کر لیاہے تاہم کچھ دیر قبل نجی ٹی وی جیونیوز نے دعویٰ کیا کہ استعفے ووٹنگ کے بعد دیئے جائیں گے لیکن کچھ دیر کے بعد خبر آئی کہ پی ٹی آئی نے ووٹنگ کے عمل کا حصہ نہ بننے کا فیصلہ کیا اور اس سے قبل ہی استعفے سپیکر کے حوالے کر دیئے جائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف کے چیف وہیب عامر ڈوگر نے بیشتر اراکین اسمبلی سے استعفوں پر دستخط بھی کروا لیے ہیں، جبکہ مراد سعید اپنا استعفیٰ سپیکر کو بھجوا بھی چکے ہیں۔اس سے قبل یہ خبر سامنے آ رہی تھی کہ عمران خان کی زیر صدارت ہونے والے پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ نئے وزیراعظم کے انتخاب میں حصہ لیا جائے گا اور شاہ محمود قریشی کو ووٹ ڈالیں گے لیکن اب یہ خبر آ رہی ہے کہ تحریک انصاف نے ووٹنگ سے قبل ہی استعفے دینے کا اعلان کیا ہے اور وزیراعظم کے انتخاب کے عمل سے بائیکاٹ کرنے کا فیصلہ کیا گیاہے۔

یہاں یہ امر قابل ذکر ہے ہے کہ تحریک انصاف کی جانب سے کہا گیا تھا کہ اگر شہبازشریف کے کاغذات نامزدگی پر عائد کیئے گئے اعتراضات کو مسترد کر دیا گیا توہ اسمبلی سے مستعفیٰ ہو جائیں گے تاہم یہ فیصلہ بھی منسوخ کر دیا گیا تھا اور اب پی ٹی آئی کی جانب سے نئی حکمت عملی سامنے آئی ہے ۔

عمران خان نے پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں کہا کہ میں ان چوروں کے ساتھ اسمبلی میں نہیں بیٹھوں گا، اکیلے بھی استعفیٰ دینا پڑا تو دوں گا ۔کل رات کو سب کو سمجھ آ گئی کہ پی ٹی آئی کی طاقت کیا ہے ۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -