برطانوی ایم پی عمران احمد خان  پر 15 سالہ بچے  پر جنسی حملے کا جرم ثابت

برطانوی ایم پی عمران احمد خان  پر 15 سالہ بچے  پر جنسی حملے کا جرم ثابت
برطانوی ایم پی عمران احمد خان  پر 15 سالہ بچے  پر جنسی حملے کا جرم ثابت
سورس: Twitter

  

لندن (ڈیلی پاکستان آن لائن)  برطانیہ کی حکمران سیاسی جماعت کنزرویٹو پارٹی (ٹوری) کے رکنِ اسمبلی (ایم پی)  عمران احمد خان پر 2008 میں 15 سالہ بچے سے زیادتی کا جرم ثابت ہوگیا۔ جیوری کے سامنے پانچ گھنٹے کے دلائل کے بعد انہیں مجرم قرار دیا گیا، انہیں سزا بعد میں سنائی جائے گی۔

سکائی نیوز کے مطابق متاثرہ لڑکا جو کہ اب 29 برس کا  ہوچکا ہے اس نے عدالت کو بتایا کہ عمران احمد خان نے اسے زبردستی شراب پلائی اور کمرے میں لے گیا جہاں پہلے فحش فلمیں دکھائیں اور پھر جنسی حملہ کیا۔  ایم پی عمران احمد خان  جو کہ خود بھی ہم جنس پرست ہیں، انہوں نے الزامات سے انکار کیا اور کہا کہ متاثرہ لڑکا اپنی جنسی شناخت کے حوالے سے کنفیوژ تھا، انہوں نے صرف اس کی کہنی کو ہاتھ لگایا تھا۔

جس وقت یہ واقعہ پیش آیا اس وقت عمران احمد خان کی عمر 34 برس تھی۔ انہوں نے جیوری کو بتایا  وہ صرف مہربان اور مدد کرنے والے شخص کے طور پر برتاؤ کر رہے تھے۔ جب دونوں کے درمیان پورنو گرافی کا موضوع زیر بحث آیا تو متاثرہ لڑکا اپ سیٹ ہوا ۔

ان الزامات پر کنزر ویٹو پارٹی عمران احمد خان کی رکنیت معطل کرچکی ہے، اگر عدالت نے انہیں 12 ماہ سے زائد قید کی سزا سنائی تو خود کار طریقے سے ان کی اسمبلی کی نشست خالی ہوجائے گی اور اس پر ضمنی انتخابات کرائے جائیں گے۔

مزید :

بین الاقوامی -برطانیہ -