میرے نومولود بچے کی لاش قبر کھود کر چرالی گئی ،پاکستانی نژاد برطانوی خاتون کا الزام

میرے نومولود بچے کی لاش قبر کھود کر چرالی گئی ،پاکستانی نژاد برطانوی خاتون ...

برمنگھم (نیوز ڈیسک) ایک پاکستانی نژاد برطانوی خاتون کا کہنا ہے کہ پاکستان میں دفنائے گئے اس نومولود بچے کی لاش قبر کھول کر چرالی گئی ہے اور خدشہ ہے کہ اسے کالا جادو کرنے والوں نے اپنے شیطانی مقاصد کیلئے چوری کیا۔ چوبیس سالہ انیلا افضل کا تعلق برطانوی شہر برمنگھم سے ہے۔ اس کے ہاں قبل از وقت پیدا ہونے والا بچہ صحت کے مسائل کی وجہ سے چار گھنٹے بعد ہی فوت ہوگیا۔ انیلا اور اس کے خاوند قاسم نے خاندانی روایت کے مطابق بچے کو پاکستان لاکر اسلام آباد کے قریب اپنے خاندان کے بزرگوں کی قبروں کے نزدیک دفن کیا۔ انیلا کا کہنا ہے کہ بچے کی وفات کے دو ماہ بعد ہی اس کی دادی نے فون کرکے بتایا کہ بچے کی لاش قبر سے چوری کرلی گئی ہے۔ یہ اندونہاک خبر سننے کے بعد غمزدہ ماں شدید صدمے سے دوچار ہے۔ بچے کی قبر کو کئی دن تک اس امید پر کھلا رکھا گیا کہ شاید کوئی اس کی ماں کی حالت پر رحم کھا کر لاش واپس رکھ جائے لیکن بدقسمتی سے ایسا نہیں ہوا۔ انیلا کا کہنا ہے کہ اس کا بچہ اس دنیا میں صرف چار گھنٹے رہ سکا لیکن یہ کتنا بڑا ظلم ہے کہ اسے قبر میں بھی موجود نہیں رہنے دیا گیا۔ اس کا کہنا ہے کہ وہ صرف یہی چاہتی ہے کہ اسے کسی طرح معلوم ہوجائے کہ اس کے جگر کا ٹکڑا کہےں سکون کے ساتھ لیٹا ہوا ہو۔

مزید : علاقائی