قادری اور عمران کا راستہ ایک ہوگیا،دور دور جاندے جاندے نیڑے نیڑے آگئے

قادری اور عمران کا راستہ ایک ہوگیا،دور دور جاندے جاندے نیڑے نیڑے آگئے

  



 لاہور(سٹاف رپورٹر)پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ طاہرالقادری نے یوم شہداء کے اجتماع میں شریک کارکنوں کو تین دن اسی مقام پر رکنے کی ہدایت کرتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ ان کا انقلاب مارچ 14اگست کو ہوگا اور آزادی مارچ اور انقلاب مارچ اکٹھے چلیں گے ۔مسلم لیگ ق،سنی اتحاد کونسل ،اتحاد بین المسلمین اور ہمار ا انقلاب مارچ 14اگست کو ہی ہوگا۔ مجھے اطلاعات ملی ہیں کہ مجھے شہید کردیا جائے گا تاکہ انقلاب سے جان چھوٹ جائے ۔مجھے شہید کردیا جائے تو کارکن نوازشریف اور شہبازشریف کو نہ چھوڑیں اور جو نظام بدلے بغیر واپس آئے اسے بھی شہید کردیں میں شہادت سے گھبرانے والا نہیں ، ظالموں کے خلاف جنگ لڑوں گا ،میں دنیا کے کسی بھی جابر حکمران سے ڈرنے والے نہیں اور نہ ہی جھکنے بکنے والا ہوں۔انقلاب قربانیوں کے بغیر نہیں آتا ۔جابر اور ظالم حکمران ہرقسم کا ہتھکنڈے استعمال کریں گے حکمران آخری حد تک جائیں گے لیکن ہمیں ظلم کے خلاف نکلنا ہوگا۔پاکستان عوامی تحریک نے کبھی امن کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑا کارکن میرا پہرہ دیتے ہیں اور میں اپنے کارکنوں کا پہرہ دیتا ہوں ۔اللہ کے حضور آپکی سلامتی کی دعا مانگتاہوں ۔ہمارا انقلاب 18کروڑعوام کو غربت سے نجات دلائے گا دہشت گردوں سے پاک پاکستان بنائے گا ۔ہمارا انقلاب پرامن ہے ان خیالا ت کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز یوم شہدا ء کی تقریب سے ماڈل ٹاؤن تحریک منہاج القرآن سیکرٹریٹ میں کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر مسلم لیگ ق کے مرکزی رہنماء چودھری پرویز الہی ،عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید ،ایم کیو ایم کے رہنما رشید گوڈیل ،تحریک انصاف کے رہنما اور اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی محمودالرشید اورسنی اتحاد کونسل کے سربراہ حامد رضا اور دیگر رہنماؤں نے خطاب کیا ۔ ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا کہ میں یہاں بیٹھا ہوں ابھی یہاں آجاؤ اور گولیاں چلا کر مجھے مار دو ۔میر ا سینہ حاضر ہے میں معصوم بچوں کے لئے شہید ہوں گا،میں ان بچوں کے لئے شہید ہوں گا جن کو صاف پانی پینے کو میسر نہیں ۔میں بے روزگار نوجوانوں کے لئے شہید ہوں گا ۔میں ان کسانوں کے لئے شہید ہوں گا جو اناج اگاتے ہیں مگر انہیں اجرت نہیں ملتی۔میں ان بچیوں کے لئے شہید ہوں گا جن کی عزت لوٹتی ہے مگر ان کا مقدمہ درج نہیں ہوتا ۔مجھے کوئی بھوک پیاس نہیں مگر میں غریب عوام کے لئے انقلاب لاؤں گا۔میرا کوئی بنک بیلنس نہیں ۔اگر میرے کوئی بنک بیلنس ہوتے تو ایف آئی اے کے ذریعے تحقیقات میں سامنے آجاتے ۔ایف آئی اے سے تحقیقات کروائی گئی لیکن ایک ثبوت نہیں ملا ۔منی لانڈرنگ کا الزام لگایا گیا مگر ایک ثبوت بھی نہ ملا۔تم نے مجھ پر ٹیکس چوری کا الزام لگایا لیکن میں شہیدوں کے خون کو گواہ بناکر کہتا ہوں کہ میں نے 1985سے بلاناغہ ٹیکس دیا کوئی ٹیکس چوری نہیں کیا۔میں نے ایک ہزار کتابیں تصنیف کیں اور پانچ سو کتابیں چھپ چکی ہیں ایک کتاب کی بھی رائلٹی نہیں لی۔کوئی بھی رائیلٹی لینے کا ثابت کردے تو میری گردن اتار دو۔کارکن تین دن یہاں پر ہی رہیں یہاں کچھ کھانا ملے گا اس پر ہی گزارا کرلینا۔کوئی بھی حادثہ ہوتا ہے تو مجھ پر اور میرے کارکنوں کے خلاف مقدمہ درج کرلیا جاتا ہے محمد اشرف نامی پولیس اہلکار ٹریفک حادثے میں جاں بحق ہوگیا تو اس کا مقدمہ بھی میرے اور میرے کارکنوں کے خلاف درج کیا گیا جس کا پول اب کھل گیا ہے ۔میں نے کارکنوں کو 33برس تک صبر اور استقامت کا درس دیا ہے۔میرے کارکن جان نہیں لے سکتے ۔حکومت جھوٹ بولتی ہے مجھ پر تہمت لگارہی ہے حکمرانوں کی غنڈ ہ گردی ختم کرنے کا وقت آگیا ہے ۔ہمارے 25ہزار کارکنوں کو گرفتار کرلیا گیا ہے تین سے چار ہزار شدید زخمی ہیں ۔میرے کارکن نے کسی کو قتل نہیں کیا ۔پاکستانی حکمران اسرائیلی حکمران بن چکے ہیں ۔حکمرانوں نے ماڈل ٹاون کو غزہ بنادیا ہے کھانا یہاں نہیں لانے دیا جارہا۔حکمرانوں کو دنیا میں یا پاکستان میں کوئی ٹھکانہ نہیں ملے گا حقوق کی آواز بلند کرنے والوں کو دیوار کے ساتھ لگایا جارہا ہے ۔ریاست اور 18کروڑعوام کے حالات بدلنے کے لئے انقلاب آئے گا۔ انہوں نے کہا کہ جابر حکمران کے سامنے کلمہ حق بلند کرنا سب سے بہتر جہاد ہے انقلاب کی جدوجہد میں شہید ہونے والا سب سے افضل ہوگا ۔انقلاب میں اپنی ذات کے لئے نہیں ملک سے لوٹ مار ختم کرنے کے لئے اور عدل و انصاف دلانے کے لئے لارہا ہے ۔پاکستان میں حقیقی معنوں میں صحیح جمہوریت لانے اور کرپشن ختم کرنے کے لئے عوام کو ہمار ا ساتھ دینا ہوگا ہماری جدوجہد ہر قسم کی دہشتگردی کے خاتمے اور قانون کی حکمرانی کے لئے ہے ۔حکمرانوں کے جانے میں چند دنوں کی بات ہے ان کا ظلم انقلاب کو یقینی بنادے گا۔ماڈل ٹاؤن میں اتنے کنٹینر لگے ہیں کہ پرندہ بھی داخل نہیں ہوسکتا۔یہاں عوام کا اتنا بڑا سمندر انقلاب کی نوید ہے ۔طاہر القادری نے کارکنوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ باہر یزید کھڑے ہیں اکیلے نہ نکلنا ۔ناشتے یا کھانے کے لئے باہر نکلنا ہوتو100افراد اکٹھے ہوکر نکلنا چوڑیاں پہن کر نہ نکلنا ۔جوتم ظلم کرے اسے ظلم کرنے کے قابل نہ چھوڑنا ۔خود پرامن رہو جو تم پر حملہ کرے اس درندے کو سبق سکھا دو۔پولیس والوں فیصلہ کرلوتمہیں ادھر آنا ہے یا ادھر ہی رہنا ہے تمھیں شریف برادران نہیں بچائیں گے وہ خود بچیں گے تو تمھیں بچائیں گے ۔ ہم تین دن یہاں رہیں گے یہاں تین دن قرآن خوانی کریں گے، تیسرے دن سوئم ہوگا ۔اگر میں شہید کردیاجاؤں تواس کے ذمہ دار نواز شریف ،شہباز شریف اور ان کے گھرکے تمام مرد اور کچن کینٹ ہوگی، اندرون اور بیرون ملک میں میرے کارکن شریف برادران کو نہ چھوڑیں ۔ انہیں زندہ نہ چھوڑنا ادارے تمھیں انصاف نہیں دیں گے اورانقلاب ضرور لانا ۔ہمار ا انقلاب مارچ 14اگست کو ہوگا ۔انقلا ب اور آزادی مارچ اکٹھے چلیں گے عمران خان کا آزادی مارچ ہوگا اور ہمار ا انقلاب مارچ ہوگا ۔انہوں نے کہا کہ نواز شریف اور شہبازشریف نے جتنے قتل کروادیئے اس کے لئے تمھارے لئے دنیا میں بھی عذاب اور آخرت میں بھی عذاب ہوگا تم جتنے چاہو عمرے کرلو سب سے پہلے تم سے ماڈل ٹاؤن میں قتل ہونے والے 14شہیدوں کا حساب لیا جائے گا ۔قوم توقع رکھے کہ عوامی تحریک ،تحریک انصاف ،سنی اتحاد کونسل ،پاکستان مسلم لیگ،اور اتحاد بین المسلیمین کے کارکن انقلاب لاکر ان کے ہاتھوں میں دے دیں ایسانہیں ہوگا انقلاب کے لئے قوم کو بھی نکلنا ہوگا جو شخص انقلاب کے لئے نہ نکلے اس کے دل میں ایک رائی برابر ایمان نہیں۔قبل ازیں طاہر القادری نے یوم شہداء کے حوالے سے دعاء کراتے ہوئے کہا کہ تمھیں مظلوموں اور چھوٹے چھوٹے بچوں کا واسطہ ،شہادتوں کے صدقے پنجاب کو کربلا بنانے والوں سے نجات دلا۔جنہوں نے سڑکوں پر خندقیں کھودیں ہمارا کھانا پینا بند کردیا ان کے مقابلے میں ہمیں انتہادرجے کی مدد فرما۔انسانیت اور مظلومیت پر کرم کر۔ عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج شہید جیت گئے ہیں قاتل ہار گئے ہیں اس وقت ملک میں چوروں ،ڈاکوؤں اور غاصبوں کا قبضہ ہے ۔اس وقت ملک میں آزادی کے لئے عمران خان اور ڈاکٹر طاہرالقادری اکٹھے نکلیں میں یقین سے کہہ سکتا ہوں کہ حکمران بھا گ جائیں گے ۔انہوں نے کہا کہ قومی سلامی کونسل کا اجلاس درحقیقت نواز شریف اور جاتی عمرہ کی حفاظتی کونسل کا اجلاس تھا خدا وہ وقت لے آیا ہے کہ نواز شریف کی گردن سے اتفاق فاؤنڈری کا سریا نکل رہا ہے ۔فوج نوازشریف ،عمران خان یا ڈاکٹر طاہرالقادری کی نہیں بلکہ اسلام اور پاکستان کی فوج ہے ۔ حیرت کی بات ہے کہ بھکر میں قتل ہونے والے کا مقدمہ ڈاکٹر طاہر القادری اور انکے کارکنوں کے خلاف درج کیاجارہا مگر سانحہ ماڈل ٹاؤن کے شہیدوں کا مقدمہ درج نہیں کیا جارہا۔بڑی عید سے پہلے حکمرانوں کی قربانی ہوگی۔مسلم لیگ ق کے مرکزی رہنما چودھری پرویز الہی نے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن میں پولیس نے شہباز شریف کے حکم پر میرے سامنے کارکنوں کو گولیاں ماریں ،میں وہ شہادتیں کیسے بھول سکتا ہوں ۔اللہ نے موقع دیا تو میر ا وعدہ ہے ہم ان سے ضرور بدلہ لیں گے اللہ کے پاس دیرسے اندھیر نہیں۔انہوں نے کہا کہ نواز شہباز نے جو حالات پیدا کئے ہیں پاکستان میں اس سے پہلے اتنا ظلم نہیں ہوا اگر عمران خان اور طاہرالقادری اکٹھے اسلام آباد جانے کے لئے نکلتے ہیں تو 13اگست تک نواز شریف اور شہباز شریف بھاگ جائیں گے ۔ غزہ اور یہاں کیا فرق رہ گیا ہے ۔وہاں اسرائیل اور یہاں نواز شہباز مسلمانوں کو شہید کررہے ہیں ۔اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی محمود الرشید نے کہا کہ شریف برادران کا ن کھل کر سن لیں ان پر بے گناہوں کا خون ہے حکومت عملا گر گئی اب دنوں کی بات ہے ۔ایم کیو ایم کے رہنما رشید گوڈیل نے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن میں پولیس نے ظلم کی انتہاکردی کارکنوں کی طرف سے ایک گولی بھی نہیں چلائی گئی حکمرانوں کو اس ملک سے جانا ہوگا ۔سنی اتحاد کونسل کے سربراہ صاحبزادہ حامد رضا نے کہا کہ طالبان کے سرپرست اور ساتھی ہمیں کہہ رہے ہیں کہ آپریشن ضرب عضب کو نقصان پہنچا رہے ہیں جبکہ ہم شروع ہی سے طالبان اور دہشت گردوں کے خلاف پاک فوج کے آپریشن ضرب عضب کے حامی اور آپریشن کا مطالبہ کرتے رہے ہیں ۔جاتی عمرہ میں چور لٹیرے بیٹھے ہیں ان کے اقتدار کا سورج غروب ہونے والا ہے ۔

مزید : صفحہ اول