کرسی ٹوٹنے سے زخمی خاتون کومقامی حکومت 55 لاکھ روپے ہرجانہ ادا کرے گی

کرسی ٹوٹنے سے زخمی خاتون کومقامی حکومت 55 لاکھ روپے ہرجانہ ادا کرے گی
کرسی ٹوٹنے سے زخمی خاتون کومقامی حکومت 55 لاکھ روپے ہرجانہ ادا کرے گی

  



نیویارک (نیوز ڈیسک) امریکی ریاست فلوریڈا کی ایک خاتون ایک سرکاری پارک میں کرسی ٹوٹنے سے زخمی ہوگئیں جس پر مقامی حکومت انہیں 55000 ڈالر (تقریباً 55 لاکھ پاکستانی روپے) بطور ہرجانہ ادا کرے گی۔ فلیسیا وائٹ فورڈ نامی خاتون ایڈز کے خلاف کام کرنے والے ایک ادارے سے منسلک ہیں اور مختلف پارکوں میں آگاہی مہم اور عوامی اجتماعات میں شامل ہونا ان کے کام کا حصہ ہے۔ انچاس سالہ فلیسیا کے وکیل نے بتایا کہ وہ فورٹ لاڈر ڈیل شہر کے ایک پارک میں ایک دعائیہ مجلس میں شریک تھیں کہ جس کرسی پر وہ براجمان تھیں وہ ٹوٹ گئی جس کی وجہ سے ان کی کمر پر چوٹیں آئیں۔ فلیسیا کا کہنا ہے کہ حکومت کو معلوم ہونا چاہیے تھا کہ پارک میں کرسیوں کی کیا حالت ہے۔ اس نے حکومت کے خلاف ہرجانے کی درخواست دے دی اور عدالت نے اس کے حق میں فیصلہ دے دیا جس پر مقامی حکام اب یہ فیصلہ کرنے کیلئے ایک میٹنگ بلارہے ہیں کہ خاتون کو ادائیگی کیسے کی جائے۔ غالب امکان یہی ہے کہ میٹنگ کے بعد خاتون کو ہرجانے کی ادائیگی کردی جائے گی۔

مزید : علاقائی