پنجاب حکومت کا پٹواری اور قانون گو کے عہدوں کو نئے نام دینے کا فیصلہ

پنجاب حکومت کا پٹواری اور قانون گو کے عہدوں کو نئے نام دینے کا فیصلہ
پنجاب حکومت کا پٹواری اور قانون گو کے عہدوں کو نئے نام دینے کا فیصلہ

  



لاہور (ویب ڈیسک) پٹوار کلچر کے خاتمے میں کامیابی حاصل نہ ہونے پر پنجاب حکومت نے پٹواریوں اور قانون گو کو نئے ناموں سے منسوب کرنے کا فیصلہ کیا ہے، پٹواری کو اسسٹنٹ فیلڈریونیو افسر جبکہ قانونگو کوریونیو سپروائزر کا نام دینے کا فیصلہ کیا ہے۔تفصیلات کے مطابق حکومت نے پٹواری کلچر کے خات،مے کیلئے زمینوں کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ کرنے کیلئے اربوں روپے کے منصوبے کا آغاز کیا تاکہ شہریوں کو پٹواریوں کے منصوبے کا آغاز کیا تاکہ شہریوں کو پٹواریوں کے ہاتھوں خوار ہونے سے بچایا جاسکے اور زمینوں کے ریکارڈ کو بھی بہتر طریقے سے محفوظ بنایا جاسکے۔ تاہم اب حکومت کو اس بات کا احساس ہوگیا ہے کہ صوبہ سے پٹوار کلچر کے خاتمے میں خاطر خواہ کامیابی حاصل نہیں ہوسکی جس کی وجہ یہ بتائی جاتی ہے کہ حکومت کا زمینوں کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ فرد دینے اور انتقال پاس کرنے تک محدود ہوگیا ہے جبکہ پٹواری کے پاس ہی اختیارات ہیں کہ وہ زمینوں کی جمع بندیاں کرے، لال کتاب کا ریکارڈ محفوظ کرے، آبیانہ کی رقم اکٹھی کرے اور اسکے علاوہ درجنوں معاملات ایسے ہیں جنہیں پٹواریوں کے بغیر مکمل نہیں کیا جاسکتا۔ ذرائع کا کہنا ہے پٹواری کی اہمیت کو مدنظر رکھتے ہوئے حکومت ان کے کردار کو قطعی طور پر ختم نہیں کرسکتی اور حکومت کی جانب سے پٹوار کلچر کے خاتمے کا نعرہ ادھورا رہ گیا ہے۔ حکومت نے اس ضرورت کے پیش نظر پٹواریوں اور قانونگو کو نئے ناموں سے منسوب کرکے نئی حکمت عملی تیار کرلی ہے اور پٹواری کو اسسٹنٹ فیلڈ ریونیو افسر کے نام سے منسوب کرنے کے ساتھ ساتھ پنجاب کے تقریباً 8 ہزارپٹواریوں کو ان کے گریڈ میں ایک درجہ ترقی دینے کا بھی فیصلہ کیا ہے جسکے تحت پٹواریوں کا گریڈ کو 9 سے 10 کردیا ہے جبکہ قانونگو کو ریونیو سپر وائزر کے نام سے جانا جائے گا اور تقریباً 900 قانون گو کے گریڈ کو بھی 11 سے 12 گریڈ میں ترقی دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

مزید : رئیل سٹیٹ