داڑھی رکھنے کی سزا، پولیس نے صحافی کو عوامی تحریک کا کارکن ظاہر کرکے دہشت گردی کا مقدمہ درج کردیا

داڑھی رکھنے کی سزا، پولیس نے صحافی کو عوامی تحریک کا کارکن ظاہر کرکے دہشت ...
داڑھی رکھنے کی سزا، پولیس نے صحافی کو عوامی تحریک کا کارکن ظاہر کرکے دہشت گردی کا مقدمہ درج کردیا

  



مریدکے (ویب ڈیسک) ”داڑھی رکھنے کی سزا“ تھانہ صدر کامونکے پولیس نے مریدکے کے صحافی کو اغوا کرنے کے بعد عوامی تحریک کا کارکن ظاہر کرکے دہشت گردی کا مقدمہ درج کرلیا۔ بدترین تشدد کے بعد صحافی کو نامعلوم جگہ پر منتقل کردیا گیا۔ علاقہ بھر کی صحافی برادری کا احتجاج اور سینئر صحافی سید اختر عباس کی فوری رہائی کا مطالبہ کردیا۔ تفصیل کے مطابق سینئر صحافی اور مریدکے پریس کلب کے رکن سید اختر عباس گوجرانوالہ پولیس اور عوامی تحریک کے کارکنوں کے درمیان جی ٹی روڈ مریدکے پر ہونے والے تصادم کی رپورٹنگ کے لئے موقع پر پہنچے تو اپنے افسران کے زخمی ہونے پر انتقام کی آگ سے بھرے پولیس اہلکار ہر داڑھی والے پر توٹ پڑے اور انہوں نے سید اختر عباس شاہ پر تشدد کی انتہا کرتے ہوئے گرفتار کرکے نامعلوم مقام پر پہنچادیا۔ صحافی کے ورثاءاور صحافی برادری رات بھر انہیں شہر کے مختلف تھانوں اور ہسپتالوں میں تلاش کرتی رہی مگر ان کا کچھ پتہ نہ چل سکا۔ اگلے روز دوپہر کے وقت معلوم ہوا کہ تھانہ صدر کامونکے پرلیس نے انہیں اغوا کرکے عوامی تحریک کارکن ظاہر کرتے ہوئے سنگین دفعات کے تحت مقدمہ درج کرلیا ہے تاہم انہیں خفیہ مقام پر رکھا گیا ہے۔

مزید : لاہور