سات سالہ بچے کے ہاتھ میں کٹا ہوا سر

سات سالہ بچے کے ہاتھ میں کٹا ہوا سر
سات سالہ بچے کے ہاتھ میں کٹا ہوا سر

  



بغداد(نیوزڈیسک)سوشل میڈیا پر پوسٹ کی گئی ایک تصویر نے دنیا میں کہرام برپا کردیا اس تصویر میں ایک خالد شروف نامی ایک داعش کے جنگجو کے بیٹے نے ایک کٹا ہوا سر تھام رکھا تھا۔ داعش کا یہ جنگجو ایک آسٹریلوی شہری ہے اور یہ اپنے تین کم سن بچوں سمیت عراق کی جنگ میں شامل ہے۔ دنیا بھر میں اس بات پر تشویش پائی جارہی ہے کہ اتنے کم عمر بچوں کو ظلم اور بربیت سے اس طرح مانوس کیا جارہا ہے جو ان کے کردار پربرا اثرڈالیں گے اور انھیں مزید ظالم بنا دیں گے۔

دنیا بھر کی مسلمان تنظیموں نے بھی اس تصویر پر احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسلام ہمیں اپنے دشمنوں کے ساتھ تصویریں اتارنے کی تعلیم ہر گز نہیں دیتا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس