میو ہسپتال میں پی جی ٹریننگ کا تنازع ، وائے ڈی اے کے 2گروپ لڑ پڑے ، پروفیسرز نے استعفوں کا اعلان کر دیا

میو ہسپتال میں پی جی ٹریننگ کا تنازع ، وائے ڈی اے کے 2گروپ لڑ پڑے ، پروفیسرز ...

  

 لاہور(جنرل رپورٹر)میو ہسپتال میں ینگ ڈاکٹر ایسوسی ایشن کی طرف سے پروفیسر آف پیڈ ز کے دفتر کو تالہ لگانے کے واقعہ کے بعدوائی ڈی اے اور پروفیسرز آمنے سامنے آگئے،میوہسپتال میدان جنگ بنا گیا،پروفیسرز نے وائی ڈی اے کے رویہ کیخلاف اجتماعی استعفے دینے کا اعلان کر دیا جس کی حمایت پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن اور پنجاب میڈیکل ٹیچر ز ایسوسی ایشن نے بھی کر دی ۔پروفیسرز نے کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی کے وائس چانسلر کو اپنے فیصلے سے آگاہ کر دیا اور انہوں نے کہا کہ وائی ڈی اے کے بعض عہدیدار ہسپتالوں کو اپنی جاگیر بنا چکے ہیں ان سے نہ کوئی پروفیسر محفوظ ہے نہ وائس چانسلر اور نہ ہی کسی ہسپتال کا ایم ایس،یہ لوگ من مانی کرتے ہیں اورجو سینئر ڈاکٹرز اور انتظامی امور چلانے والے افسران کی غیر قانونی ڈیمانڈز پوری نہ کریں تو ان کے دفاتر کو نہ صرف تالے لگائے ہیں بلکہ ان کو دفاتر میں بیٹھنے نہیں دیتے ۔وائی ڈی اے نے شعبہ پیڈز کے پروفیسر اکمل لائیق کے دفتر کو تالہ لگانے،پروفیسر خالد مسعود گوندل کو دھمکیاں دینے اور پروفیسرز کیخلاف نازیبا زبان استعمال کرنے پر معافی نہ مانگی تو وہ اجتماعی استعفے دے دیں گے۔پروفیسرز کے مشترکہ اعلامیے کی اطلاع پا کر وائی ڈی اے کے سینکڑوں ڈاکٹرز کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی پہنچ گئے اور انہوں نے اکیڈمک کونسل کے اجلاس کا گھیراؤ کر لیااور پروفیسر ز کیخلاف نعرے بازی کی۔گزشتہ روز وائی ڈی اے کیطرف سے پروفیسر لائیق کے دفتر کوتالہ لگانے کیخلاف پروفیسر سے اظہار یکجہتی کیلئے میو ہسپتال کے تمام پروفیسرز بچہ وارڈ پہنچے تو اطلاع پا کر وائی ڈی اے کے درجنوں ڈاکٹرز بھی بچہ وارڈ پہنچ گئے اور انہوں نے پروفیسرز کیخلاف نعرے بازی شروع کر دی جس پر وائی ڈی اے 2گروپوں میں تقسیم ہو گئی،وائی ڈی اے مطلوب اور شعیب گروپ اورڈاکٹررانا سہیل اور سلمان کاظمی گروپ میں لڑائی جھگڑ ا شروع ہو گیا اور دونوں طرف سے ایک دوسرے پر گھونسے اور مکے چلائے گئے۔بتایا گیا ہے کہ وائی ڈی اے پروفیسر اکمل لائیق کا دباؤ ڈالہ کہ وہ پوسٹ گریجوایشن ٹریننگ میں داخلہ کیلئے ان کے ڈاکٹروں کو اجازت دیں مگر پروفیسر لائیق نے مؤقف اختیار کیا کہ حکومت مفت پی جی ٹریننگ پر پابندی عائد کر چکی ہے لہٰذ ا وہ آنریری پی جی ٹریننگ کی اجازت نہیں دے جس پر وائی ڈی اے نے انہیں آفس سے نکال کر تالہ لگا دیاتھا۔گزشتہ روز اس پر دوبارہ جنگ شروع ہو گئی ینگ ڈاکٹرز اور پروفیسرز ایک دوسرے کے آمنے سامنے آگئے اور نعرے بازی کی پروفیسرز کا کہنا کہ ینگ ڈاکٹروں نے معافی نہ مانگی تو استعفوں کے ساتھ ساتھ ہڑتال بھی کریں جبکہ ینگ ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ آنریری بنیادوں پر ان کے ڈاکٹروں کو پی جی ٹریننگ میں داخلہ دیں تو معاملہ ختم کر دیں گے۔گزشہ روز تک دونوں فریقین کے درمیان معاملہ ختم نہ ہو سکا۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -