اسمبلی کے نمائندے منتخب ہوئے ہیں جو بات کرنے کا قانونی حق رکھتے ہیں

اسمبلی کے نمائندے منتخب ہوئے ہیں جو بات کرنے کا قانونی حق رکھتے ہیں

  

سری نگر(کے پی آئی) مقبوضہ کشمیر کی حکمران جماعت پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی نے دولت مشترکہ پارلیمانی کانفرنس میں جموں کشمیر اسمبلی اسپیکر کو مدعو نہ کرنے کے پاکستانی موقف پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس صورتحال سے مسائل حل کرنے یا ریاست میں امن قائم کرنے کے ماحول میں مدد نہیں ملے گی۔ پی ڈی پی ترجمان نعیم اختر نے کہا ہم اس سے اتفاق نہیں کرتے ہیں کہ جموں و کشمیر اسمبلی یا اس کے اسپیکر کی کوئی قانونی حیثیت نہیں ہے۔حقیقت یہ ہے کہ اس اسمبلی کے نمائندے منتخب ہوئے ہیں جو بات کرنے کا قانونی حق رکھتے ہیں۔انہوں نے حریت پسندوں کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ لوگ صرف ایک خیال کی نمائندگی کرتے ہیں اور جن کا ایک نکتہ نظر ہے لیکن ہم (قانون سازوں) کا جمہوری کردار ہوتا ہے ۔ انہوں نے کہاا س لیے کوئی یہ نہیں کہہ سکتا کہ ہم کچھ نہیں ہیں۔ہم اس کو تسلیم نہیں کرتے ہیں۔

انہوں نے پاکستانی وزیراعظم کے مشیر برائے قومی سلامتی اور خارجہ امور سرتاج عزیزکے حالیہ بیان کے بارے میں ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا دنیا جانتی ہے کہ ہم ایک آزادانہ اور منصفانہ الیکشن کے ذریعے منتخب ہوئے ہیں۔پی ڈی پی لیڈر نے کہا کہ کچھ لوگ ریاست کے قانون سازیہ پر سوال اٹھارہے ہیں لیکن عزیز سمیت ان لوگوں کے تبصرے برحق نہیں ہیں ۔اختر نے کہا80فیصد ووٹنگ کے بعد بھی اگر کوئی کہے گا کہ ہمیں کوئی جواز نہیں ہے تو یہ افسوسناک ہے۔اس سے قیام امن میں کوئی مدد نہیں ملے گی۔

مزید :

عالمی منظر -