افغانستان ، کابل ایئرپورٹ کے قریب خودکش دھماکہ ، 5افراد ہلاک ،16زخمی

افغانستان ، کابل ایئرپورٹ کے قریب خودکش دھماکہ ، 5افراد ہلاک ،16زخمی

  

 کابل (آئی این پی )افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ائیرپورٹ کے قریب خودکش کاردھماکے میں سیکورٹی اہلکاروں سمیت5 افرادہلاک اور 16 زخمی ہوگئے ،طالبان نے حملے کی ذمہ داری قبول کرلی،دوسری جانب افغان انٹیلی جنس نے داعش کے 5پاکستانی ارکان کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔پیر کو افغان میڈیا کے مطابق کابل پولیس چیف عبدالرحمان رحیمی نے بتایا ہے کہ خودکش حملہ آور نے دھماکہ خیز مواد سے بھری کار کو کابل انٹرنیشنل ائیرپورٹ کے داخلی راستے پر واقع چیک پوسٹ کے قریب دھماکے سے اڑا دیا گیا جس کے نتیجے میں سیکورٹی اہلکاروں سمیت 5 افراد ہلا ک اور 16 زخمی ہوگئے ۔دھماکے کے بعد شہر میں کالے دھوائیں کے بادل دکھائی دےئے جبکہ ایمبولنس گاڑیاں اور سیکورٹی فورسز جائے وقوعہ پر پہنچ گئے جہاں زخمیوں اور لاشوں کو قریبی ہسپتالوں میں منتقل کردیا گیا ۔سکیورٹی حکام کا کہنا ہے کہ خود کش حملہ آور کا ہدف بکتر بند گاڑیوں کا ایک قافلہ تھا۔طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے ایک ٹویٹ کے ذریعے حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ انکا ہدف غیر ملکی تھے ۔عینی شاہدین کے مطابق دھماکے سے متعدد کانیں بھی تباہ ہوگئیں جبکہ کئی عمارتوں کے شیشے بھی ٹوٹ گئے ۔یہ واقعہ ایک ایسے وقت سامنے آیا ہے جب کابل میں چند روز قبل متعدد بم دھماکوں کے نتیجے میں کئی درجن افراد ہلاک اور سینکڑوں زخمی ہوئے تھے۔ گزشتہ حملوں کی ذمے داری طالبان عسکریت پسندوں نے قبول کی تھی۔کابل میں گذشتہ جمعے کو ہونے والے دہشت گردی کے تین سنگین واقعات کے بعد صدر اشرف غنی نے ہفتہ کو قومی سلامتی کونسل کے ایک ہنگامی اجلاس کی صدارت کی تھی جس میں ملک میں امن و امان کی بگڑتی ہوئی صورت حال پر غور کیا گیا تھا۔ادھر افغان انٹیلی جنس نیشنل ڈائریکوریٹ آف سیکورٹی (این ڈی ایس ) نے داعش کے 5پاکستانی ارکان کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے ۔این ڈی ایس کی طرف سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ گرفتار افراد کا تعلق پاکستان سے ہے جو ننگرہار میں داعش کی حمایت میں دہشتگردانہ سرگرمیوں میں ملوث تھے۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ گرفتار کیے جانے والوں کی شناخت عبدالراشد عرف غلام اللہ کے نام سے ہوئی ہے جو پشاور کا رہنے والا ہے ۔دوسرے کی شناخت محمد ایاز ولد سلیم جو اورکزئی کا رہنے والا ہے ،تیسرے کی شناخت رحمت الدین ولد نصرالدین کے نام سے ہوئی جو اورکزئی کا رہائشی ہے جبکہ چوتھے کی شناخت عزیزاللہ کے نام سے ہوئی جو کرم ایجنسی کا رہائشی ہے ،پانچویں کی شناخت میراث خان کے نام سے ہوئی جو پشاور کا رہنے والا ہے ۔بیان میں کہا گیا ہے کہ گرفتار ہونے والے افراد پہلے داعش کمانڈر مولوی سلیم اور ملا گل زمان جو جلال آباد شہر کے ضلع ایچن میں سرگرم ہیں کیلئے کام کرتے تھے۔

مزید :

علاقائی -