قیادت کی عدم دلچسپی ، پیپلزپارٹی پنجاب کے رہنماؤں کی دوسری جماعتوں میں شمولیت

قیادت کی عدم دلچسپی ، پیپلزپارٹی پنجاب کے رہنماؤں کی دوسری جماعتوں میں ...

  

لاہور( شہزاد ملک) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیرمین بلاول بھٹو زرداری اور شریک چیرمین آصف علی زرداری کی پنجاب میں عدم دلچسپی کے باعث پیپلز پارٹی پنجاب اور لاہور کے عہدیدارن اور کارکنان میں سخت مایوسی اور تشویش کی ایک لہر پائی جاتی ہے جس کی وجہ سے پیپلز پارٹی کے یہ عہدیدارن اور کارکنان پیپلز پارٹی کو چھوڑ کر دوسری جماعتوں بالخصوص تحریک انصاف میں شامل ہو رہے ہیں واضح رہے کہ پیپلز پارٹی پنجاب اور لاہور تنظیم کی جانب سے متعدد بار اپنی قیادت چیرمین بلاول بھٹو زرداری اور شریک چیرمین آصف علی زرداری سے یہ مطالبات کئے جاتے رہے ہیں کہ وہ لاہور کے بلاول ہاؤس آکر بیٹھیں اور کارکنان سے براہ راست ملاقاتیں کرکے ان کے جذبات کو سنیں اور ان کی آرء کی روشی میں آئندہ کی سیاسی حکمت عملی اختیار کی جائے ۔پیپلز پارٹی پنجاب اور لاہور کی جانب سے اس قسم کے مطالبات سامنے آنے کے بعد چیرمین بلاول بھٹو زرداری کے بارے میں یہ خبریں آئیں کہ وہ رمضان کا سارا مہینہ لاہور کے بلاول ہاؤس میں گذاریں گے اور پنجاب بھر کے کارکنان سے ملاقاتیں کریں گے لیکن رمضان بھی گزر گیا اور اب عید کو گزرے بھی کئی دن ہو چکے ہیں لیکن چیرمین پیپلز پارٹی لاہور کا دورہ نہ کر سکے جس کی وجہ سے کارکنان میں پائی جانے والی بد دلی بڑھتی چلی گئی ۔یہاں پر یہ امر بھی قابل زکر ہے کہ پیپلز پارٹی پنجاب اور لاہور تنظیم کے اجلاسوں میں پارٹی قیادت سے اس بات کا بھی مطالبہ کیا جاتا رہا ہے کہ وہ مسلم لیگ (ن) سے مفاہمت کی سیاست کو چھوڑ کر ایک حقیقی اپوزیشن کا کردار ادا کرے لیکن پیپلز پارٹی کی قیادت کی طرف سے اس مطالبے پر بھی کوئی توجہ نہیں دی گئی یہی وجہ ہے کہ جب بھی پیپلز پارٹی کا کوئی عہدیدار پیپلز پارٹی کو چھوڑ کر جاتا ہے تو وہ اپنی جانب سے پیپلز پارٹی کو چھوڑنے کی ایک بڑی وجہ اسے مسلم لیگ (ن) کی ایک بی ٹیم قرار دیتا ہے اور یہ کہتا ہوا نظر آتا ہے کہ اس وقت اپوزیشن کی ترجمانی صرف پی ٹی آئی کررہی ہے اور پیپلز پارٹی ایک فرینڈلی اپوزیشن بن چکی ہے یہ سب وجوہات پیپلز پارٹی کی لیڈر شپ کے لئے ایک اہم چیلنج ہیں کہ وہ آئندہ کے لئے کیا حکمت عملی اختیار کرتی ہے۔

عدم دلچسپی

مزید :

صفحہ آخر -