پاکستان کی بقاء اور سلامتی کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے،علماء کونسل

پاکستان کی بقاء اور سلامتی کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے،علماء کونسل

  

لاہور( نمائندہ خصوصی)والدین پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ اپنے بچوں کو جسمانی اور جنسی تشدد سے بچانے کے لیے آگاہی دیں کہ جسم کے کن حصوں کو کسی دوسرے شخص کوچھونے نہیں دینا چاہئے، پاکستان علماء کونسل کی طرف سے عوام سے اپیل ۔نظریہ پاکستان پر عمل ہوتا تو آج قصور جیسے واقعات نہ ہوتے ۔ پاکستان کا قیام مجبوروں ، مظلوموں کو انصاف اور تحفظ فراہم کرنے کے لیے تھا۔ ندائے پاکستان امن و سلامتی کا پیغام آج پوری قوم کی آواز بن چکی ہے ۔ پاکستان کی بقاء اور سلامتی کے لیے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔ یہ بات پاکستان علماء کونسل کے زیر اہتمام ’’ندائے پاکستان سیمینار‘‘ سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہی ۔ سیمینار کی صدارت پاکستان علماء کونسل کے مرکزی چیئرمین حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے کی۔سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے حافظ محمد طاہر محمود اشرفی ، صاحبزادہ زاہد محمود قاسمی ، الحاج بوستان قادری، مولانا یوسف انور، مولانا قاری محمد حنیف بھٹی ، حافظ محمد امجد ، مولانا شبیر احمد عثمانی ، مولانا حبیب الرحمن عابد ،فادر نثار برکت،صاحبزادہ منشاء سالک قادری، قاری عصمت اللہ معاویہ ، الحاج طیب شاد قادری ، میاں محمد طیب ایڈووکیٹ، مولانا محمد اعظم ، قاری اسماعیل رحیمی، قاری شاہد ندیم ، مولانا الطاف اللہ ، مولانا غلام اللہ، مولانا خضر حیات نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کا پرچم قائد اعظم محمد علی جناح نے علماء کے سپرد کیا تھا اور علماء اس پرچم کو کبھی سر نگوں نہیں ہونے دیں گے۔ پاکستان کے قیام میں مسلمانوں کے ساتھ ساتھ غیر مسلموں نے بھی اپنا کردار ادا کیا تھا۔ ہر پاکستانی کو بغیر کسی تعصب کے انصاف اور حقوق ملنے چاہئیں۔مقررین نے کہا کہ پاکستان کو مدینہ منورہ کی طرز کی ریاست بنانے کے لیے منظم جدوجہد کی ضرورت ہے ۔ مدینہ منورہ کی ریاست کے نقش قدم پر بنائی جانے والی ریاست مسلمانوں اور غیر مسلموں کے حقوق کا تحفظ کر سکے گی۔ پاکستان علماء کونسل کے مرکزی چیئرمین اور وفاق المدارس پاکستان (رجسٹرڈ) کے صدر حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے کہا کہ پاکستان کے قیام میں علماء کا بنیادی کردار تھا لیکن گذشتہ چند سالوں کے ددوران پگڑی، داڑھی کے خلاف مہم چلائی جا رہی ہے ۔اسلام کو دہشت گردی کے ساتھ جوڑا جا رہا ہے ۔ پاکستان کے ساتھ غیر مسلموں کے حقوق کی سلبی کی بات کی جاتی ہے ہمیں ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم متحد ہو کر اسلام ، پاکستان اور علماء کے حوالے سے پیدا کی جانے والی غلط فہمیوں کو دور کریں اور دہشت گردی اور انتہاء پسندی کے خاتمے کے لیے افواج پاکستان کو اپنے مکمل تعاون کا یقین دلاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ندائے پاکستان مہم ایک مشن بن گئی ہے اور پاکستان علماء کونسل محروم اور مجبور طبقوں کے حقوق کے لیے اپنی جدوجہد جاری رکھے گی ۔ انہوں نے کہا کہ بعض قوتیں مسلسل مدارس کے نام کے ساتھ دہشت گردی کو منسوب کر رہی ہیں لیکن پوری دنیا نے موجودہ سرچ آپریشنوں کے دوران دیکھا کہ کسی مدرسہ سے نہ کوئی اسلحہ ملا نہ بارود ۔ یہ مدارس کی سرخروی اور ان قوتوں کی ناکامی ہے ۔مدارس بغیر کسی خوف کے قرآن و سنت کی تعلیم جاری رکھیں۔ انہوں نے کہا کہ 12 اگست کو اسلام آباد میں ندائے پاکستان کانفرنس ہو گی جس میں تمام مسالک و مکاتب فکر کی قیادت شریک ہو گی۔

علماء کونسل

مزید :

صفحہ آخر -