طبقاتی قانون قصورمیں بچوں پرجنسی تشدد کاقصوروار ہے،ناصر اقبال

طبقاتی قانون قصورمیں بچوں پرجنسی تشدد کاقصوروار ہے،ناصر اقبال

  

لاہور(پ ر)ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی صدرمحمدناصراقبال خان،سیکرٹری جنرل محمدرضاایڈووکیٹ ،سینئر نائب صدور فاروق چوہان ،تنویرخان ،میاں زاہد لطیف ،صدریورپ رانابشارت علی خاں ،صدرمدینہ منورہ سرفرازخان نیازی ،صدرپنجاب یونس ملک،صدر چنیوٹ راناشہزادٹیپو اورصدرقصورمیاں اویس علی نے کہا ہے کہ پاکستان کاطبقاتی قانون قصورمیں بچوں پرجنسی تشدد کاقصوروار ہے،انتظامیہ نے بھی بدترین نااہلی کامظاہرہ کیامتاثرہ بچوں اوران کے ورثاکی بے بسی توسمجھ آتی ہے مگرقانون کے علمبرداروں کی بے حسی ناقابل فہم ہے حکمرانوں کامائنڈسیٹ بدلے بغیر تھانہ کلچر تبدیل نہیں ہو گا ریاست کی طرف سے بروقت اورسخت ایکشن کی صورت میں کئی معصوم بچوں کودرندگی سے بچایا جا سکتا تھا ہمارے ملک میں جس وقت تک کوئی اندوہناک واقعہ یاسانحہ منظرعام پرنہ آجائے اس وقت حکمران خودکوئی احکامات صادرکرتے ہیں اورنہ پولیس سمیت ضلعی اداروں کواپنا فرض منصبی یادآتا ہے ۔

وہ ایک اجلاس سے خطاب کررہے تھے ۔محمدناصراقبال خان نے مزید کہا کہ متاثرہ خاندانوں اورقصور پولیس کے درمیان حالیہ تصادم کے بعدپنجاب کے ارباب اقتداربیداراورملزمان گرفتارہوئے بچوں پرجنسی تشدد اوران کی ویڈیوزبناکر ان کے ورثاکوبلیک میل کرنے اورویڈیوزبیرون ملک بھجوانے سے پاکستان کانام بدنام ہوالہٰذاء ملزمان کاٹرائل فوجی عدالت میں کیا جائے ریاست جنسی تشدد میں ملوث درندوں کی عدم گرفتاری پرمتعلقہ حکام کی بازپرس کرے گرفتارملزمان کوقرارواقعی سزادی جائے جودوسروں کیلئے سامان اورنشان عبرت بنے ۔ انہوں نے کہا کہ بچوں پرجنسی تشدد کے سلسلہ میں وزیرقانون راناثناء اللہ اورآرپی اوشیخوپورہ کے بیانات شرمناک ،قابل مذمت اورقابل گرفت ہیں۔ملزمان کی سرپرستی کرنیوالے کون ہیں ،انہیں بھی بے نقاب اورگرفتار کیا جائے ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -