سپریم کورٹ ‘اردو کو سرکاری زبان قرار دینے کے فیصلوں پر عملدرآمد کی تفصیلات طلب

سپریم کورٹ ‘اردو کو سرکاری زبان قرار دینے کے فیصلوں پر عملدرآمد کی تفصیلات ...
سپریم کورٹ ‘اردو کو سرکاری زبان قرار دینے کے فیصلوں پر عملدرآمد کی تفصیلات طلب

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)سپریم کورٹ نے اردو کو سرکاری زبان قرار دینے کے فیصلوں پر عملدرآمد کی تفصیلات طلب کر لیں ۔ تفصیلات کے مطابق جسٹس جواد ایس خواجہ کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی۔ جسٹس جواد ایس خواجہ نے ریمارکس دیئے کہ ہم انگریزی زبان کو غیر اہم نہیں کہہ رہے ، اردو کی اہمیت تو تسلیم کریں ۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کو بتا دیں کس وزارت نے کیا اقدامات کئے ،کوئی آئین پر عمل نہیں کرتا تو اس کے نتائج بھی بتا دیں ۔ جسٹس جواد ایس خواجہ نے کہا معاملہ پسند نا پسند کا نہیں آئین کی پاسداری کا ہے آئین کے مطابق پندرہ سال میں انگریزی کو اردو سے تبدیل کرنا تھا ،آرٹیکل 251کے اطلاق کے حوالے سے اقدامات نہیں کئے گئے۔انہوں نے ریمارکس دیئے کہ حکومت کس کی آنکھوں میں دھول جھونک رہی ہے ،ایڈیٹوریل کمیٹی کے کسی ممبر کو تین ماہ سے ایک روپیہ نہیں ملا ۔بعد میں سپریم کورٹ نے سماعت کل تک ملتوی کرتے ہوئے اردو کو سرکاری زبان قرار دینے کے فیصلوں پر عملدرآمد کی تفصیلات طلب کر لیں۔

مزید :

اسلام آباد -اہم خبریں -