ترقیاں واپس، ہزاروں سیٹیں خالی، سنیارٹی ری فکس کرنے کا حکم

ترقیاں واپس، ہزاروں سیٹیں خالی، سنیارٹی ری فکس کرنے کا حکم
ترقیاں واپس، ہزاروں سیٹیں خالی، سنیارٹی ری فکس کرنے کا حکم

  

لاہور (ویب ڈیسک) پنجاب پولیس میں آﺅٹ آف ٹرن (انعامیہ ترقیاں) واپس لینے کے بعد ایس پی، ڈی ایس پی، انسپکٹر، سب انسپکٹر، اے ایس آئی اور ہیڈ کانسٹیبل رینک کے عہدوں کی سینکڑوں سیٹیں خالی ہونے کے بعد انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب مشتاق سکھیرا نے ان سیٹوں پر افسران کی تعیناتیوں کے لئے محکمانہ پروموشن بورڈ طلب کرنے کے لئے اہل افسران و اہلکاروں کے کاغذات مکمل کرنے کا حکم جاری کردیا ہے تاکہ اہلیت کے معیار پر پورا اترنے والے افسران کو اگلے عہدوں پر ترقیاں دی جاسکیں اور خالی سیٹوں کو پر کرکے افسران و اہلکاروں کی کمی کو پورا کیا جاسکے۔

روزنامہ خبریں کے مطابق پنجاب پولیس میں اس وقت ایس پی عہدے کی 60 سے زائد، ڈی ایس پی عہدے کی 100 سے زائد، انسپکٹر عہدے کی 300 سے زائد، سب انسپکٹر، اے ایس آئی اور ہیڈ کانسٹیبل عہدے کی ہزاروں سیٹیں خالی ہوچکی ہیں جن پر پنجاب پولیس کے افسران کو ترقیاں دے کر تعینات کیا جائے گا۔ آئی جی پنجاب کے حکم پر صوبے بھر کے پولیس افسران نے اپنے اپنے اضلاع میں آﺅٹ آف ٹرن پروموشن کے بعد سنیارٹی ری فکس کرنے کا عمل شروع کردیا ہے۔ سنیارٹی ری فکس ہونے کے بعد ان افسران و اہلکاروں کے نامون کو ڈی پی سی میں شامل کرکے ان کو نئے سرے سے ترقیاں دی جارسکیں اور ان کی نئے سکیلوں کے حساب سے تنخواہیں بھی دی جاسکیں۔

اخبار کا مزید کہنا ہے کہ آﺅٹ آف ٹرن پروموشن واپس ہونے کے بعد بھی تاحال مذکورہ افسران و اہلکار سنیارٹی ری فکس نہ ہونے کے باعث پرانے پے سکیلوں پر ہی تنخواہیں اور الاﺅنس لے رہے ہیں۔ آئی جی پنجاب کے حکم پر ایس پی کے عہدے پر محکمانہ ترقیاں دینے کے لئے پنجاب پولیس کے 11 سینئر ڈی ایس پیز کی کلیئرنس رپورٹس طلب کرلی گئی ہیں۔ مذکورہ ڈی ایس پیز اس سے قبل دو مرتبہ پروموشن بورڈ کے اجلاس میں ڈیفر ہوچکے ہیں، اہلیت کے معیار پر پورا نہ اترسکنے پر ان کو ترقیاں نہ مل سکیں تھیں ان افسران میں ڈی ایس پی امتیاز بھلی، ڈی ایس پی ممتاز سروہی، ڈی ایس پی مس رشیدہ بی بی، ڈی ایس پی خالد جاویدپپی، ڈی ایس پی مس حمیدہ بی بی، ڈی ایس پی مس ریحانہ اسلم، ڈی ایس پی مس شائستہ شمیم، ڈی ایس پی مس نرگس یاسمین، ڈی ایس ی محمد طارق اور ڈی ایس پی سلطان میراں کے نام شامل ہیں۔

آئی جی پنجاب نے حکم دیا ہے کہ ان افسران کی سالانہ خفیہ کارکردگی رپورٹ، ریکارڈ اور ان کی کارکردگی سے متعلق تمام تفصیلات فوری طور رپ فراہم کی جائیں تاکہ ان افسران کے نام محکمانہ پروموشن بورڈ میں شامل کرکے ان کو ایس پی کے عہدے پر ترقیاں دی جاسکیں۔ آئندہ چند روز میں محکمانہ پروموشن بورڈ کا اجلاس آئی جی پنجاب مشتاق احمد سکھیرا کی زیر صدارت ہونے کا امکان ہے۔

مزید :

لاہور -