تہرے قتل کے4مجرموں کو6,6مرتبہ سزائے موت کاحکم

تہرے قتل کے4مجرموں کو6,6مرتبہ سزائے موت کاحکم

  

لاہور(نامہ نگار)انسداد دہشت گردی کی عدالت نے تہرے قتل کے مقدمہ میں ملوث4مجرمان کو 6،6 مرتبہ سزائے موت جبکہ مختلف دفعات کے تحت 150 سال قید کی سزا کا حکم سنا دیا ہے ، مقدمہ میں شریک4ملزمان کو بری کردیا ہے جبکہ دیگر3ملزمان کو عدلت پہلے ہی اشتہاری قرار دے چکی ہے ۔انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج عزیز اللہ کلو نے تہرے قتل کے مقدمہ کی سماعت مکمل ہونے پر گزشتہ روزفیصلہ سنایا ہے ،فیصلے کے مطابق مجرم وارث بٹ، فیصل، قیصر اور حارث علی کو 6،6 مرتبہ سزائے موت اور مختلف دفعات میں ڈیڑھ100 سال قید کی سزا کا حکم سنایا گیا ہے ، مجرموں کو 3لاکھ 10ہزار روپے فی کس جرمانہ بھی ادا کرنا ہو گا۔ عدالت نے مقدمہ کے دیگر 4 ملزمان بابر علی جٹ، نور حیدر، ارسلان وحید اور فیصل رفیق کو بری کر دیاہے۔ مقدمہ میں 3ملزمان کو گرفتار نہ کئے جانے پر اشتہاری قرار دیا جا چکا ہے۔ مجرمان نے 2014ء میں بادامی باغ کے علاقہ میں فائرنگ کر کے محمدیونس، محمد بلال اور ریاست علی کو قتل کر دیا تھا جبکہ فائرنگ سے مصطفٰی خان، مجتبٰی خان، خالد خان اور نصیر احمد زخمی ہو گئے تھے۔

مزید :

صفحہ آخر -