سری نگر، بھارتی فوج کے مظالم جاری، پیلٹ گن کے استعمال سے مزید 100سے زائد کشمیری زخمی

سری نگر، بھارتی فوج کے مظالم جاری، پیلٹ گن کے استعمال سے مزید 100سے زائد ...

  

سری نگر ( اے این این ) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم جاری ٗ پیلٹ گن کے استعمال سے مزید ایک سو سے زائد کشمیری زخمی ٗ 5 کی حالت تشویشناک ٗ وادی کے مختلف علاقوں میں احتجاجی مظاہروں کے دوران پرتشدد کارروائیاں ٗ سول لائنز کے مائسمہ اور بٹہ مالو میں ایک بار پھر غیر اعلانیہ کرفیو نافذ ٗ اندرونی علاقوں کی طرف جانے والی تمام سڑکوں کو خاردار تار سے سیل کردیا ٗریڈکراس روڑ کو بندشوں سے استثنیٰ حاصل ٗگاندربل میں پتھراؤ کے الزام میں 4 افراد پر پبلک سیفٹی ایکٹ عائد ٗ دو کو کٹھوعہ سنٹرل جیل ٗ دو کو ادھم پور سنٹرل جیل منتقل کردیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق سری نگر کے شہرخاص کے علاوہ سیول لائنز کے مائسمہ اور بٹہ مالو کو ایک بار پھر غیر اعلانیہ کرفیو کے دائر میں لایا گیا ہے۔ فورسز نے منگل کی علی الصبح مائسمہ کے اندرونی علاقوں کی طرف جانے والی تمام سڑکوں کو خاردار تار سے سیل کردیا تاہم ریڈکراس روڑ کو بندشوں سے مستثنیٰ رکھا گیا ہے۔ سرینگر کے گوجوارہ ،صفاکدل ، نور باغ ، کاوڈارہ، نوہٹہ، عیدگاہ،سعدہ کدل، سکہ ڈافر، راجوری کدل، بہوری کدل، ملارٹہ، حبہ کدل، زینہ کدل ،فتح کدل، نواب بازار، خانیار، رعناواری، خانقاہ معلی ،نواکدل ،قمرواری ،مہاراج گنج ،ناؤپورہ اور پائین شہر کے دیگر علاقوں میں سخت ترین بندشوں کے نتیجے میں ہو کا عالم تھا اور سڑکوں پرصرف فورسز اور پولیس اہلکار گشت کرتے نظر آ رہے تھے۔سیول لائنز بشمول لال چوک میں کسی احتجاجی مظاہرے یا احتجاجی ریلی کو روکنے کے لئے فورسز اور پولیس کی اضافی نفری تعینات کردی گئی ہے۔ انتہائی اہم ترین شخصیات بشمول ریاستی وزیر اعلی اور ان کے کابینی رفقا کی طرف سے سول سیکرٹریٹ پہنچنے کیلئے استعمال ہونے والے مولانا آزاد روڑ پر بھی سیکورٹی فورسز کی اضافی نفری تعینات دیکھی گئی۔ کسی بھی احتجاجی مظاہرے کی قیادت کرنے سے روکنے کیلئے بیشترمزاحمتی لیڈران کو یا تو اپنے گھروں میں نظر بند رکھا گیا ہے، یا پولیس تھانوں میں مقید رکھا گیا ہے۔سرینگر کے انتہائی حساس بادامی باغ کنٹونمنٹ کے تحت آنے والے علاقوں سونہ وار،بٹوارہ،پاندریٹھن اور دیگر علاقوں میں فوج نے شاہراہ پر گاڑیوں میں گشت کیا جس کے دوران لوگوں کو سنگبازی یا اس طرح کی دوسری کاروائیوں سے دور رہنے کی ہدایت دی۔ پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت دو کو کٹھوعہ سنٹرل جیل جبکہ دو کو ادھمپور سنٹرل جیل منتقل کردیا گیا۔عمر مجید صوفی ولد عبدالمجید ساکنہ کوندہ بل،تجمل صادق بٹ ولد محمد صادق بٹ ساکنہ سالورہ گاندربل،جان محمد نجار ولد غلام محمد ساکنہ چک فتح پورہ،محمد عبداللہ ملہ ولد احمد ملہ ساکنہ بی ہامہ گاندربل کو چند روز قبل پتھراو کرنے کی پاداش میں گرفتار کیا گیا تھا ۔بعد ازاں ضلع مجسٹریٹ گاندربل نے پولیس گاندربل کی سفارش پر چاروں پر سیفٹی ایکٹ عائد کردیا جس کے بعد دو کو کٹھوعہ سنٹرل جیل جبکہ دو کو ادھمپور سنٹرل جیل منگل وار صبح منتقل کر دیا گیا۔ پولیس ذرائع نے چاروں افراد پر پبلک سیفٹی ایکٹ کے نفاذ کی تصدیق کردی ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -