پنجاب حکومت نے مقدمات کے اخرجات برداشت کرنے کی سکت نہ رکھنے والے قیدیوں کے کیسز لڑنے والے وکلاء کی فیسوں میں اضافہ کردیا

پنجاب حکومت نے مقدمات کے اخرجات برداشت کرنے کی سکت نہ رکھنے والے قیدیوں کے ...

  

رحیم یارخان(بیورونیوز)پنجاب حکومت نے صوبہ بھرکی جیلوں میں بند ایسے قیدی جو اپنے مقدمات کے اخراجات اور وکلاء کی(بقیہ نمبر38صفحہ12پر )

فیسوں کی ادائیگی کی سکت نہیں رکھتے ان کے کیسز لڑنے والے وکلاء کی فیسوں میں اضافہ کر دیا ہے۔ واضح رہے کہ مقدمات کے اخراجات برداشت کرنے کی سکت نہ رکھنے والے قیدیوں کی جانب سے مفت قانونی امداد کے لئے متعلقہ ضلع کے ڈی سی او کو درخواست دی جاتی ہے جس کی منظوری کے بعد پنجاب پبلک پراسیکیوشن ڈیپارٹمنٹ میں پہلے سے منظورشدہ ڈیفنس کونسلز کو مقدمہ الاٹ کر دیا جاتا ہے تاہم اب صوبائی حکومت کی جانب سے نادار قیدیوں کے کیسز کی پیروی کرنے والے وکلاء کی فیسوں میں اضافہ کر دیا گیا ہے جس کے مطابق سپریم کورٹ اور ہائی کورٹ میں مقدمہ لڑنے والے وکیل کو 25 ہزار روپے، سیشن کورٹ میں 20 ہزار روپے اور مجسٹریٹ کی عدالت میں مقدمہ لڑنے والے وکلاء کو 15 ہزار روپے فیس ادا کی جائے گی۔

فیسوں میں اضافہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -