صوبائی حکومت کی ملاکنڈ ترقیاتی منصوبوں کیلئے فنڈز کی عدم فراہمی

صوبائی حکومت کی ملاکنڈ ترقیاتی منصوبوں کیلئے فنڈز کی عدم فراہمی

  

درگئی ( نمائندہ پاکستان )صوبائی حکومت کا مالاکنڈ میں ترقیاتی منصوبوں کے لئے فنڈز کی عدم فراہمی ۔ گذشتہ چار ماہ کے دوران محکمہ سی اینڈ ڈبلیوکو 40کروڑ روپے کے منصوبوں کی تکمیل کے لئے 3 کروڑ 80لاکھ ہی مل چکے ہیں ۔ ٹھیکہ دار برادری دیوالیہ ہورہے ہیں ۔ وزیر اعلیٰ خیبر پختون خوا مالاکنڈ میں ترقیاتی منصوبوں کے لئے فنڈز کی عدم فراہمی کا فوری نوٹس لیں ۔ مکمل کردہ ترقیاتی منصوبوں کے ساتھ ساتھ ٹھیکہ داروں کی کروڑوں روپے ایڈیشنل سیکورٹی رقوم بھی پھنسی ہوئی ہے۔ ترقیاتی فندز ریلیز کرنے میں مالاکنڈ کے ساتھ ان صاف نہیں ہوا تو بھر پور احتجاج کریں گے۔ مالاکند کے ٹھیکہ دار برادری کے صدر فضل رازق خان اور جنرل سکرٹری شاد محمد کا درگئی میں پریس کانفرنس سے خطاب تفصیلات کے مطابق : کنٹریکٹرز ایسوسی ایشن تحصیل درگئی کے صدر فضل رازق خان اور جنرل سکرٹری شاد محمد نے یہاں درگئی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ضلع مالاکنڈ میں40کروڑ روپے کے منظور کردہ ترقیاتی منصوبوں کے لئے گذشتہ چار ماہ کے دوران فندز کی ععدم فراہمی پر شدید احتجاج کرتے ہوئے واضح کیا ہے کہ مالاکنڈ میں ٹھیکو ں کے زیادہ تر کام کنٹریکٹرز کو منصوبوں کے لئے مختص رقم متعلقہ محکموں اور ٹھیکہ داروں کو نہ ملنے کے سبب تعطل کے شکار ہیں سڑکوں کی پختگی اور سکولوں کی تعمیر کے کل 40کروڑ روپے کے ترقیاتی سکیموں کے لئے سی اینڈ ڈبلیو کو صرف 3کروڑ 80لاکھ کے ناکافی ترقیاتی فنڈز ملنا نہ صرف نا انصافی ہے بلکہ ٹھیکہ دار برادری کی تضحیک ہے ۔ انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت کی ضلع مالاکنڈ کے ساتھ فندز فراہمی میں نا انصافی سے مالاکند بھر کے ٹھیکہ دار برادری نہ صرف دیوالیہ ہوگئے ہیں بلکہ فاقوں پر مجبور اور مزدوروں کے ادائیگیوں لے قابل نہیں۔ انہون نے وزیر اعلیٰ خیبر پختون خواء سے پر زور مطالبہ کیا کہ مالاکنڈ کے پی کے 98او پی کے 99میں ترقیاتی سکیموں کی تکمیل کے لئے نوشہرہ ، صوابی اور ضلع دیر پائیں کی طرح فنڈز نہ ملنے کا فوری نوٹس لیں اور ٹھیکہ داروں کے ساتھ فوری انصاف کرکے منظور کردہ اور زیادہ تر مکمل کئے گئے منصبوبوں کے ترقیاتی فنڈز ریلیز کی جائیں بسورت دیگر نہ صرف ٹھیکہ دار سڑکوں پر احتجاج کرنے پر مجبور ہوجائیں گے بلکہ عوام بھی ان کے منظور کردی ترقیاتی منصوبوں کے تععطل کے سبب سڑکوں پر احتجاج کرلیں گے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -