درگئی بار کا کوئٹہ سانحہ پر تشویش کا اظہار

درگئی بار کا کوئٹہ سانحہ پر تشویش کا اظہار

  

درگئی (نمائندہ پاکستان )درگئی بار ایسوسی ایشن کے وکلاء نے کوئٹہ میں ٹارگٹ کلنگ اورنہتے وکلاء پر ہسپتال میں دھماکہ کی شدید الفاظ میں مذمت کرکے آج دوسزرے روز بھی عدالتوں سے مکمل بائیکاٹ کیا ۔ اس سلسلے میں درگئی بار ایسوسی ایشن کا ایک ہنگامی اجلاس زیر صدارت صدر سید حکیم خان ایڈوکیٹ اوروکلاء کے پر ہجوم اجلاس میں متفقہ منظور ہونے والے قرار داد کے ذریعے حکومت سے واقعہ کی آزادانہ اعلیٰ عدالتی تحقیقات کرانے اور واقعہ میں ملوث عناصر کو کیفر کردار تک پہنچانے کا پر زور مطالبہ کیا گیا۔ اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے صدر درگئی بار ایسوسی ایشن سید حکیم خان ایڈوکیٹ، جنرل سکرٹری میاں ارشد حسین باچہ ایدوکیٹ، سینئر وکلاء غفار گل خان ایڈوکیٹ، بشیر اللہ خان ایڈوکیٹ ، آمان خان ایڈوکیٹ ، شیرین خان ایڈوکیٹ ،حامد خان ایڈوکیٹ، نسیم اللہ ایدوکیٹ ، ضمیر گل ایدوکیٹ ، پیر زادہ ایڈوکیٹ ، سلمان تاج ایدوکیٹ ، ارشد کٹک ایدوکیٹ ، واجد خان ایدوکیٹ اور صفدر عباس ایڈوکیٹ اور بلال احمد ایڈوکیٹ نے۔ شہید ہونے والے وکلاءء اور صحافیوں کے ورثاء کو فوری امداد دی دینے اورزخمی وکلاء کو بہتر طبی امداد کی فراہمی یقینی بنانے پر زور دیا۔ درگئی بار کے وکلاء نے ملک میں بڑھتی ہوئی بد امنی پر تشویش کا اظہار کیا اور حکومت سے وکلاء کے تحفظ میں بری طرح ناکامی پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا وکلاء نے ملک میں دہشت گردی واقعات کے پیچھے محرکات اور قوتوں کو کھلی طرح بے نقاب کرکے عوام کو تحقیقاتی رپورٹ سے آگاہ کرنے کا بھی پر زور مطالبہ کیا۔دریں اثناء درگئی بار کے وکلاء کی سیکورٹی سخت کرنے کے لئے اسسٹنٹ کمشنر درگئی شہاب خان نے لیویز نفری بڑھانے اور واک تھرو گیٹ نصب کرنے کے بھی احکامات جاری کرلئے ہیں اور وکلاء کو یقین دہانی کرائی گئی کہ ان کے تحفظ کے لئے ٹھوس عملی اقدامات اٹھائے جائیں گے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -