دریائے چناب کا سیلابی ریلا ملتان کی حدود میں داخل، بیٹ سے لوگوں کا انخلاء جاری

دریائے چناب کا سیلابی ریلا ملتان کی حدود میں داخل، بیٹ سے لوگوں کا انخلاء ...

  

ملتان،خانیوال،مظفرگڑھ، کوٹ ادو،سیت پور ( سپیشل رپورٹر،خبرنگار،نمائند گان)دریائے چناب کا سیلا بی ریلا مختلف اضلاع میں تباہی مچاتا ملتان اور مظفرگڑھ کی حدود میں داخل ہوگیا۔بیٹ کے علاقوں سے لوگوں کا انخلا جاری تحصیل علی پور میں فلڈ وارننگ جاری سرکاری اہلکاروں کی چھٹیاں منسوخ کردی گئیں اس سلسلے میں ملتان سے سپیشل رپورٹر،خبرنگار کے مطابق دریائے چناب کا سیلابی ریلہ مختلف اضلاع میں بیٹ کے علاقوں تباہی مچاتا ہوا ملتان اور مظفر گڑھ کی حدود میں داخل ہوگیا آج شام ہیڈ محمد والا سے گزرے گا ۔سیلابی ریلے کی شدت 2لاکھ 80ہزار کیوسک رہ گئی ۔بیٹ کے علاقوں سے مقامی لوگوں کا انخلاء جاری ،بیشتر نے نکلنے سے انکار کردیا۔تفصیل کیمطابق دریائے چناب کا سیلابی ریلہ تریموں ہیڈ ورکس سے ہوتا ہوا گزشتہ شب رات گئے تک ضلع ملتان اور مظفر گڑھ کی حدود میں داخل ہوگیا ہے جو آج شام تک ہیڈ محمد والا سے گزرے گا ۔محکمہ آبپاشی کے ذرائع کے مطابق ملتان پہنچنے تک مذکورہ سیلابی ریلے کی شدت 2لاکھ 80ہزار کیوسک رہ گئی ہے جس سے صرف بیٹ کے علاقے متاثر ہوں گے تاہم کسی بڑی تباہی کا خدشہ نہیں ہے ۔دریائے چناب میں سیلاب کے پیش نظر ملتان میں دریائی بیٹ کے علاقوں میں لوگوں کے انخلاء کا سلسلہ جاری ہے اور متاثرین سرکاری کیمپوں اور محفوظ مقامات پر اپنے عزیز واقارب کے پاس منتقل ہو رہے ہیں تاہم بیشتر مقامی خاندانوں نے اپنے گھروں سے نکلنے سے انکا ر کردیا ہے ۔ضلعی انتظامیہ کے مطابق انھیں آج پولیس اور دیگر سیکورٹی اداروں کی معاونت سے محفوظ مقامات پرمنتقل کیا جائے گا۔سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ ملتان کی طرف سے دریائے چناب میں سیلابی ریلے کے ممکنہ متاثرین کی امداد کیلئے ضلع ملتان کی حدود میں20ریلیف کیمپوں میں50،50خیمے نصب کردئیے گئے ہیں ذرائع کے مطابق فلڈ ریلیف کیمپوں کے قیام کا ٹاسک ٹاؤنز کو سونپ دیا گیا ہے جنہوں نے ضلعی حکومت کی طرف سے ملنے والے50,50خیمے ان کیمپوں پر نصب کردئیے ہیں جبکہ ٹاؤنز نے سٹاف کی 24گھنٹے ڈیوٹی کا شیڈول بھی جاری کردیا ہے جہاں ٹاؤنز سٹاف آٹھ،آٹھ گھنٹے ڈیوٹی سرانجام دے گا۔خانیوال سے بیورو نیوز کے مطابق ڈی سی او زید بن مقصود نے تحصیل کبیر والا کے سیلابی بند پر سرکاری محکموں کی طرف سے کیے گئے حفاظتی اقدامات کا جائزہ لینے کے لیے معائنہ کیا اس موقع پر اے سی کبیروالا اکبر ظہور ‘ ڈی ای او ریسکیو 1122دانش خلیل ‘ڈی او لائیو سٹاک ڈاکٹر مشتاق احمد زار ‘ ایکسئین انہار سمیت دیگر سرکاری افسران بھی ان کے ہمراہ تھے ۔ ڈی سی او نے تحصیل کبیر والا میں دریائے چناب اور دریائے راوی کے سنگم کنڈ سرگانہ سیلابی بند ‘ فاضل شاہ زیرو پوائنٹ اور نئے تعمیر ہونے والے فاضل شاہ جے بند جس سے آئندہ دریائے چناب کا کٹاوء نہیں ہوگا کا تفصیلی معائنہ کیا ۔نئے تعمیر ہونے والے فاضل شاہ جے بند پر ایکسیئن انہار نے زیر تعمیر بند بارے ڈی سی او کو تفصیلی بریفنگ دی ۔ڈی سی او نے ایکسئین انہار کو ہدایت کی کہ وہ اس بند کی تعمیر کا کام جلد از جلد مکمل کریں اور اس کی تعمیر میں معیار کا خاص خیال رکھیں ۔ڈی سی او نے کنڈ سرگانہ سیلابی بند اور فاضل شاہ سیلابی بند پر ریسکیو 1122سمیت دیگر محکموں کی طرف سے کیے گئے حفاظتی اقداما ت اور ریلیف بارے انتظامات کا جائزہ لیا ۔ڈی سی او نے کہا کہ تمام سرکاری محکمہ جات سیلاب کے ممکنہ خطرات سے نمٹنے کے لیے ہمہ وقت چوکس رہیں اور اپنے انتظامات سمیت لوگوں کو ریلیف دینے کے لیے مشینری ‘ گاڑیاں اور دیگر متعلقہ سامان کو چالو حالت میں رکھیں ۔مظفرگڑھ،کوٹ ادو سے سٹی رپورٹر،تحصیل رپورٹر کے مطابق دریائے چناب میں تریموں کے مقام پر آج پانی کا اخراج ڈیڑھ لاکھ کیوسک ریکارڈ کیا گیا ہے جو کل (جمعہ المبارک )تک مظفر گڑھ کی حدود میں پہنچے گاجس سے دریا کے نشیبی علاقوں میں نچلے درجے کا سیلاب متوقع ہے ،یہ بات صوبائی سیکرٹری سپورٹس ،ٹورازم اور یوتھ افےئر نیر اقبال نے متوقع سیلاب کے حوالے سے منعقدہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی،انہوں نے کہا کہ ابھی تک سیلاب کے حوالے سے صورتحال مکمل کنٹرول میں ہے اور کسی ناگہانی صورتحال کا سامنا کرنے کیلئے سارے ممکنہ انتظامات مکمل کر لئے گئے ہیں ،ریسکیو 1122کے ٹیمیں اور محکمہ آبپاشی کے عملے کو حساس مقامات پر تعینات کر دیا گیا ہے ریلیف کیمپ قائم کرکے سٹاف کی ڈ یوٹی لگا دی گئی ہے اور بندوں کی مسلسل مانیٹرنگ بھی کی جا رہی ہے ۔ اس موقع پر بریفنگ دیتے ہوئے ڈی سی او شوکت علی نے بتایا کہ ضلعی انتظامیہ نے اپنے تمام انتظامات مکمل کرلیے ہیں اور متوقع سیلاب سے ضلع کے120سے130مواضعات زیر آب آنے کا خدشہ ہے، جہاں سے آبادی کے اخراج کیلئے وارننگ جاری کردی گئی ہے۔بعد ازاں انہوں نے ڈی سی او کے ہمراہ مراد آباد اور دوآبہ فلڈ بند کا دورہ کرکے اقدامات کا جائزہ لیا۔سیت پور سے نمائندہ پاکستان کے مطابق تحصیل علی پور میں فلڈ وارننگ جاری ،سرکاری اہلکاروں کی چھٹیاں منسوخ کردی گئیں ،فلڈ ریلیف میڈیکل کیمپ لگا دیئے گئے ،کیمپوں میں ڈاکٹر ز سمیت تمام عملہ اور ادویات بھجوادی گئیں ،ان خیالات کا اظہار ڈپٹی ڈی ایچ او علی پور ڈاکٹر خالد محمود آرائیں نے فلڈ ریلیف میڈیکل کیمپ ہائی سکول سیت پور میں ادویات کی فراہمی کے وقت کیا ،انہوں نے کہا کہ ممکنہ حالیہ سیلاب کے پیش نظر تحصیل علی پور میں ہائی سکول مڈوالا ،ہائی سکول بستی چنجن ،ہائی سکول تھہیم والا ،گرلز پرائمری سکول مراد آباد ،بوائز پرائمری سکول حسین آباد ،بوائز پرائمری سکول بستی بربرہ ،گورنمنٹ بوائز ہائی سکول سیت پور،بوائز ہائی سکول خانگڑھ دوئمہ ،پرائمری سکول مراد پور جنوبی اور پرائمری سکول خضر آباد سمیت 10فلڈ ریلیف میڈیکل کیمپ لگا دیئے گئے ہیں اور ان تمام کیمپوں میں ڈاکٹر ،ڈسپنسر ،مڈ وائف ،ایل ایچ وی سمیت تمام عملہ حاضر کردیا گیا ہے اور ان کیمپوں میں اے آر وی اور اے ایس وی ویکسین سمیت تمام ادویات بھی فراہم کر دی گئی ہیں انہوں نے کہا کہ کسی بھی ایمر جنسی سے نمٹنے کے لئے محکمہ صحت کے ملازمین کو ہائی الرٹ کردیا گیا ہے ۔

مزید :

ملتان صفحہ اول -