سی پیک منصوبہ خطے کیلئے ناگزیر ہے ، مکمل حمایت کرتے ہیں : افغان سفیر

سی پیک منصوبہ خطے کیلئے ناگزیر ہے ، مکمل حمایت کرتے ہیں : افغان سفیر
سی پیک منصوبہ خطے کیلئے ناگزیر ہے ، مکمل حمایت کرتے ہیں : افغان سفیر

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) عمومی طور پر پاک چین اقتصادی راہداری( سی پیک) منصوبے کے مخالف سمجھے جانے والے ملک افغانستان نے ایسی تمام افواہوں کو جھوٹا ثابت کرتے ہوئے اس منصوبے کی مکمل حمایت کی یقین دہانی کروادی ۔ افغانستان کی جانب سے یہ بھی کہا گیا ہے کہ سی پیک منصوبہ خطے کی خوشخالی کیلئے ناگزیر ہے۔ 

اسلام آباد میں تعینات افغان سفیر نے راولپنڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے زیراہتمام پاکستان افغانستان سینٹرل ایشین ریجن ٹریڈ سمٹ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سی پیک منصوبہ پاکستان کے علاوہ افغانستان اور وسط ایشیائی ریاستوں کے لیے بھی مفید ہے۔ دنیا بھر میں علاقائی تجارت میں اضافہ ہو رہا ہے اس لیے ہمیں بھی ریجنل ٹریڈ کو فروغ دینا ہوگااور اس حوالے سے ٹھوس اقدامات کرنے ہوں گے ۔

والز نے 14اگست کے موقع پر بچوں کے ساتھ جشن آزادی کامزہ دوبالا کرنے کا طریقہ متعارف کروادیا، مکمل خبر کیلئے اس لنک پر کلک کریں

اس موقع پر وفاقی وزیر تجارت خرم دستگیر نے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستان تجارت کے فروغ کے لیے ہر ممکن اقدامات کر رہا ہے، دنیا میں علاقائی تجارت فروغ پا رہی ہے ، پاکستان اس سلسلے میں تجارت میں حائل رکاوٹیں دور کرنے کے لیے اقدامات کررہا ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ افغانستان سے تجارتی تعلقات کو فروغ مل رہا ہے جس کی وجہ سے دونوں ملکوں کے درمیان تجارت کا حجم بڑھا ہے۔

یہ بھی پڑھیں ، لاہور ایئرپورٹ پر طیارے سے پرندہ ٹکرا گیا اور پھر۔۔۔

وفاقی وزیر پلاننگ احسن اقبال نے کہا کہ خطے کی صورتحال تبدیل ہو رہی ہے اورافغانستان بھی کہتا ہے کہ اقتصادی راہداری پورے خطے کا منصوبہ ہے، ہمارا مقصد برآمدات میں اضافہ کرنا ہے، گوادر بندرگاہ وسط ایشیا کے لیے پرکشش ہے ہم حالت جنگ میں ہیںمگر سی پیک منصوبے کو ہرگز بند نہیں کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو ترقی دینا ہے تو برآمدات میں اضافہ اورعلاقائی تعاون کو فروغ دینا ہو گا، سی پیک کے دشمنوں کو شکست دے کر اس کو حقیقت بنائیں گے۔

مزید :

قومی -