کشمیر میں تحریک آزادی سے دنیا کی توجہ ہٹانے کے لیے کوئٹہ میں دہشت گردی کروائی گئی:حافظ محمد سعید

کشمیر میں تحریک آزادی سے دنیا کی توجہ ہٹانے کے لیے کوئٹہ میں دہشت گردی کروائی ...
کشمیر میں تحریک آزادی سے دنیا کی توجہ ہٹانے کے لیے کوئٹہ میں دہشت گردی کروائی گئی:حافظ محمد سعید

  

لاہور (نیوز ڈیسک)امیر جماعۃ الدعوۃ پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ کشمیر میں جاری تحریک آزادی سے دنیا کی توجہ ہٹانے کے لیے کوئٹہ میں دہشت گردی کروائی گئی، کشمیری میدان میں نکل چکے اور قربانیاں پیش کرنے کا حق ادا کرہے ہیں، جدوجہد آزادی کشمیر میں ہم ان کا ہر ممکن ساتھ دیں گے، چودہ اگست کو ملک بھر میں ضلع و تحصیل کی سطح پر مظلوم کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے کشمیر ریلیوں و کانفرنسوں کا انعقاد کیا جائے گا اور کیمپ لگائے جائیں گے،کراچی میں 14 اگست کو دفاع پاکستان کونسل کے تحت بڑا یکجہتی کشمیر کارواں ہوگاجس سے سیاسی و مذہبی جماعتوں کے مرکزی قائدین اور دیگر اہم شخصیات خطاب کریں گی۔

مرکز القادسیہ چوبرجی میں سینئر کالم نگاروں کے اعزاز میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے حافظ سعید نے کہا کہ کشمیریوں کی تحریک آزادی عروج پر ہے، ایک ماہ سے مقبوضہ کشمیر میں کرفیو نافذ ہے،بھارتی فوج کی گولیوں کے سامنے بھی کشمیری پاکستانی پرچم بلند کررہے ہیں، پاکستان کشمیریوں کا وکیل ہے اور مظلوم کشمیری مشکل ترین حالات میں وطن عزیز پاکستان کی طرف دیکھ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کے تاجروں کو سیب کی تجارت نہ ہونے سے 12ارب روپے کا نقصان اٹھانا پڑے گا لیکن اس مرتبہ کشمیری تاجروں نے اعلان کیا ہے کہ ہم نقصان برداشت کرلیں گے مگر بھارتی حکومت اور فوج کی بلیک میلنگ کا شکار نہیں ہوں گے۔ تحریک آزادی اب رکنے والی نہیں ہے کشمیر کا بچہ بچہ آزادی کیلئے نکل کھڑا ہوا ہے، ایسے حالات میں پاکستان کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ کشمیریوں کی کھل کر مددوحمایت کرے اور تحریک آزادی میں ان کا ساتھ دے۔

حافظ محمد سعید نے کہا کہ کشمیریوں کی مدد کے لیے جماعۃ الدعوۃ بھر پور مہم جاری رکھے گی۔ چودہ اگست کو یوم آزادی کے موقع پر کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے ملک گیر سطح پر پروگراموں کا انعقاد کیاجائے گا۔ انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کی جدو جہد آزادی جس مرحلہ میں پہنچ چکی ہے اب 8 لاکھ بھارتی فوج ظلم تشدد کے ذریعے اسے دبانے میں کامیاب نہیں ہوسکتی,پیلٹ گن اور پیپر گیس جیسے مہلک ہتھیاروں کے استعمال کے باوجود کشمیریوں کے عزم و حوصلے بلند ہیں, وہ اپنے سینوں پر گولیاں کھاتے ہوئے پاکستانی پرچم لہرا رہے ہیں اور کسی صورت انڈیا کی 8 لاکھ فوج کا غاصبانہ قبضہ قبول کرنے کے لیے تیار نہیں ہیں۔

مزید :

قومی -