مسلمان خاتون ائیرہوسٹس جس نے اپنا ایمان بچانے کیلئے نوکری کو لات ماردی، ’حکم‘ نہ ماننے پر نوکری سے نکال دیا گیا

مسلمان خاتون ائیرہوسٹس جس نے اپنا ایمان بچانے کیلئے نوکری کو لات ماردی، ...
مسلمان خاتون ائیرہوسٹس جس نے اپنا ایمان بچانے کیلئے نوکری کو لات ماردی، ’حکم‘ نہ ماننے پر نوکری سے نکال دیا گیا

  

نیویارک (نیوز ڈیسک)مغرب انسانی حقوق اور مساوات کا درس ساری دنیا کو دیتا ہے لیکن جب بھی اسلام اور مسلمانوں کی بات ہو تویہ کھلم کھلا شیطان کا روپ دھار لیتا ہے۔ امریکا میں بھی یہ شیطانی واردات اس وقت دیکھنے میں آئی جب امریکی ائیرلائن ایکسپریس جیٹ نے ایک مسلمان ائیرہوسٹس کو حکم جاری کر دیا کہ وہ یا تو مسافروں کو شراب پیش کرے یا نوکری چھوڑ دے، مگر آفرین ہے اس نیک سیرت خاتون پر کہ جس نے شیطانی حکم ماننے کی بجائے دلکش نوکری کو لات مار دی۔

والز نے 14اگست کے موقع پر بچوں کے ساتھ جشن آزادی کامزہ دوبالا کرنے کا طریقہ متعارف کروادیا

نیشنل پوسٹ کی رپورٹ کے مطابق شارلی سٹینلے نامی ائیرہوسٹس نے نہ صرف غیر اخلاقی حکم ماننے سے انکار کر دیا بلکہ امتیازی سلوک کا نشانہ بنائے جانے پر ائیرلائن کے خلاف قانونی کارروائی کا آغاز بھی کردیا ہے۔ تعصب کا نشانہ بننے والی ائیرہوسٹس نے اپنی درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ ائیرلائن نے اس کے مذہبی حقوق کی خلاف ورزی کی ہے اور اسے بلاجواز ملازمت سے برخاست کیا ہے۔

دوران پرواز نوجوان لڑکی سے مسافر نے ایک سوال ایسا پوچھ لیا کہ زندگی ہی بدل گئی اور پھر جہاز کے اندر ایسے مناظر جو آپ نے زندگی میں کبھی کسی جہاز میں نہ دیکھے ہوں گے

دوسری جانب ائیرلائن نے ڈھٹائی کی اتنہا کرتے ہوئے یہ بیان جاری کر دیا ہے کہ ملازمین کے حقوق کا تحفظ، مساوی مواقع کی فراہمی اور غیر امتیازی برتاﺅ اس کی پالیسی کے بنیادی ستون ہیں۔جب ائیرہوسٹس کے ساتھ کئے گئے سلوک کے بار میں سوال کیا گیا تو یہ کہہ کر بات گول کردی کہ ائیرلائن انفرادی معاملات پر تبصرہ نہیں کرتی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -