بھارت کی مشہور ماڈل حسینہ ’’شاطر چور ‘‘ نکلی ،پولیس نے رنگے ہاتھوں گرفتار کر لیا ،خوبرو چور حسینہ ‘‘کی ایسی کہانی کہ سب کے ہوش اڑا دے

بھارت کی مشہور ماڈل حسینہ ’’شاطر چور ‘‘ نکلی ،پولیس نے رنگے ہاتھوں گرفتار ...
بھارت کی مشہور ماڈل حسینہ ’’شاطر چور ‘‘ نکلی ،پولیس نے رنگے ہاتھوں گرفتار کر لیا ،خوبرو چور حسینہ ‘‘کی ایسی کہانی کہ سب کے ہوش اڑا دے

  

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک)بھارت کی ایک معروف ماڈل جو کبھی ریمپ کی رونق ہوا کرتی تھی ’’چورحسینہ‘‘ نکلی ،ماڈلنگ کی دنیا میں ناکامی پر اپنے ڈرائیور کے ساتھ مل کر لوگوں کو لوٹتے ہوئے رنگے ہاتھوں گرفتار ،درجنوں وارداتوں کا اعتراف کر لیا ۔

بھارتی نجی چینل ’اے بی پی نیوز‘‘ کے مطابق 23 سال کی ویشالی رجوریا نام کی ایک خوبصورت ماڈل نے کئی بڑے برانڈ کے لئے ماڈلنگ کی ہے،لیکن ماڈلنگ کا دھندہ مندا پڑا تو یہ ماڈل جرم کے سفر پر نکل پڑی، اس نے اپنی خوبصوررتی کو ہتھیار بنایا اور مدد کے بہانے بہت سے لوگوں کو اپنے شیطانی کھیل کا شکار بنا ڈالا، لوگوں کی مدد کے بہانے جعل سازی کا کھیل کھیلنے والی اس شیطانی ماڈل کے گناہ کی وہ کہانی جو آپ بھی ہوش اڑا دے گی۔نجی ٹی وی ’’اے بی پی نیوز‘‘ کے مطابق ریمپ پر اپنے جلوے بکھیرنے والی یہ ماڈل اب پولیس کی گرفت میں ہے کیونکہ مدد کے بہانے یہ لوگوں کی آنکھوں میں دھول جھونک کر ان کے ساتھ کر رہی تھی فراڈ اور چوری کئے گئے اے ٹی ایم کارڈز سے ہزاروں روپے نکال لیتی تھی ،کئی خوبصورت اور نوجوان لڑکیاں بھی ویشالی کے فراڈ کا شکار ہو چکی ہیں ،ان سب کو ویشالی ایسا چکمہ دیتی تھی کہ وہ سمجھ بھی نہیں پاتے تھے لیکن چند ہی منٹوں میں ان کے اے ٹی ایم کارڈ سے ویشالی ہزاروں روپے نکلوا لیتی تھی ۔

ویشالی جتنی خوبصورت ہے اتنا ہی شیطانی دماغ کی مالک ہے ،وہ واردات سے قبل ہمیشہ اعلیٰ اور قیمتی لباس پہنتی اور سفر کے لئے گاڑی استعمال کرتی ہے ،جسے اس کا ڈرائیور چلاتا اور یہ ’’چور حسینہ ‘‘ گاڑی کی پچھلی سیٹ پر بیٹھتی ہے ،اسے گاڑی سے اترتے ہوئے کوئی بھی دیکھنے والا تصور بھی نہیں کر سکتا کہ یہ خوبرو حسینہ ’’چور‘‘ بھی ہو سکتی ہے ۔ یہ خوبرو حسینہ کسی کے اے ٹی ایم کارڈ سے 50ہزار اور کسی کے اکاؤنٹ سے 40 اور 30ہزار تک نکالتی تھی ،لوگوں کی آنکھوں میں دھول جھونک کر ان کے سامنے ہی ویشالی انہیں لوٹتی اور کسی کو بھنک بھی نہ لگنے نہیں دیتی تھی ۔بھارت کی یہ خوبرو حسینہ واردات ہمیشہ کسی نوجوان لڑکے ،لڑکی ،کسی بوڑھی خاتون یا پھر بزرگ مردوں کے ساتھ ہی کرتی تھی اور لوگوں کے ساتھ فراڈ کرنے کے لئے اس نے اپنے پاس مختلف بینکوں کے درجنوں اے ٹی ایم کارڈز بھی رکھے ہوئے تھے ۔ماڈل ویشالی لوگوں کے اکاؤنٹ سے پیسے اڑانے کے لئے اے ٹی ایم کے ارد گرد گھومتی رہتی یا پھر گاڑی میں بیٹھی رہتی تھی جیسے ہی کوئی بزرگ عورت یا پھر نوجوان لڑکی کو اے ٹی ایم کے اندر داخل ہوتا دیکھتی تو وہ بھی اس کے پیچھے جا کر کھڑی ہو جاتی تھی، اس کے پاس بہت سے بینکوں کے اے ٹی ایم کارڈز موجود ہوتے تھے جیسے ہی اس نشانے پر آئی عورت یا نوجوان لڑکا اے ٹی ایم مشین میں اپنا کارڈز رکھتا اور اے ٹی ایم مشین کوئی خرابی بتاتی تو وہ ان سے کہتی تھی، لگتا ہے کچھ پرابلم ہے، لائیں دیں میں آپ کی مدد کر دیتی ہوں۔

بزرگ عور تیں اور نوجوان لڑکے اس کی معصوم اور بھولی صورت کو دیکھ کر اس کی فطرت کا اندازہ نہیں لگا پاتے تھے اور مدد کے بہانے پھینکے گئے اس کے جال میں پھنس جاتے تھے، اس کے بعد وہ اپنے شکار سے اے ٹی ایم مشین میں دوبارہ کارڈز ڈالنے کے لئے کہتی تھی اور اسی دوران وہ ان کا پاس ورڈ دیکھ لیتی تھی، اے ٹی ایم مشین سے جیسے ہی کارڈز باہر آتا تھا تو وہ اس کارڈز کو فورا لپک لیتی تھی اور اسی دوران وہ اپنے پاس رکھے کارڈز سے اپنے شکار کے کارڈز کو تبدیل کر دیتی تھی۔ماڈل ویشالی کے پاس کئی بینک کے کارڈز موجود رہتے تھے. یہ جسے اپنا شکار بناتی تھی اسے اسی بینک کا کارڈز دیتی تھی جس بینک کے کارڈز کا استعمال اس کا شکار بنا ہوا شخص کرتا تھا،اس لئے لوگوں کو اس بات کی بھنک بھی نہیں لگتی تھی کہ ویشالی نے مدد کے بہانے ان کے کارڈ کو اپنے پاس رکھے کارڈ سے تبدیل کر دیا ہے، اس کے بعد شروع ہوتا تھا اس کا حقیقی کھیل، جیسے ہی اس کا شکار بنا شخص وہاں سے جاتا یہ اس کا کارڈ اے ٹی ایم میں ڈالتی اور اس کے پاس ورڈ کا استعمال کر کے اکاؤنٹ سے ہزاروں روپے نکال لیتی تھی۔

پولیس نے اس ’’چور حسینہ ‘‘ کے پاس سے کئی بینکوں کے اے ٹی ایم کارڈز بھی برآمد کئے ہیں، پولیس کے مطابق یہ ان تمام لوگوں کے کارڈز ہیں جنہیں ماڈل ویشالی رجوریا نے اپنے شیطانی کھیل کا شکار بنایا، یہ اپنے ایک شکار کارڈ دوسرے کو دے کر دھوکہ دیتی تھی اور دوسرے کے کارڈ سے تیسرے کی آنکھوں میں دھول جھونکتی تھی۔ دہلی کے مکھرجی شہر کی رہنے والی ایک بزرگ خاتون کے ساتھ بھی ویشالی نے ایسا ہی کیا،اس بزرگ خاتون کے اکاؤنٹ سے ویشالی نے 25 ہزار روپے نکال لئے، خوبرو حسینہ کی چوری کا شکار بننے کے بعد اس بزرگ خاتون نے پولیس میں رپورٹ درج کروا دی اور خود اسے پکڑنے کے لئے مکھرجی شہر کے اس اے ٹی ایم پر نظر رکھنے لگیں جہاں ویشالی نے ان کی آنکھوں میں دھول جھونکی تھی اور ایک دن یہ شیطانی ماڈل انہیں اسی اے ٹی ایم سینٹر کے باہر گھومتی ہوئی نظر گئی۔پولیس نے فورا اس کو گرفتار کر لیا جبکہ اس جرم میں اس کے شریک کار ڈرائیور کو بھی گرفتار کر لیا ہے ، پولیس نے جب اس ماڈل کے ریکارڈ کھنگالے تو پتہ چلا اس پر پہلے سے بھی اسی طرح کی دھوکہ دہی کے پانچ کیس درج ہیں، جبکہ یہ چور حسینہ اپنے فراڈ کا ادھا حصہ کار ڈرائیور کو دیتی تھی ،پولیس نے ویشالی سے کئی بینکوں کے اے ٹی ایم کاردز اور 40ہزار نقدی بھی برآمد کر لی ہے ۔گرفتاری کے بعد ویشالی راجوریا کا کہنا تھا کہ وہ ان پیسوں کے ذریعے بالی ووڈ میں قدم جمانے کے لئے اپنا پورٹ فولیو بہتر بنانے کے لئے فوٹو شوٹ کراتی اور مختلف پارٹیوں میں شرکت کرتی ۔

مزید :

تفریح -