لاہور ہائی کورٹ نے پنجاب بھر میں زرعی انکم ٹیکس کی وصولی روک دی

لاہور ہائی کورٹ نے پنجاب بھر میں زرعی انکم ٹیکس کی وصولی روک دی
لاہور ہائی کورٹ نے پنجاب بھر میں زرعی انکم ٹیکس کی وصولی روک دی

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہو رہائیکورٹ نے زرعی انکم ٹیکس کے نوٹیفکیشن پر پنجاب بھر میں عملدرآمد روکتے ہوئے صوبائی حکومت سے دو ہفتوں میں جواب طلب کر لیاہے۔جسٹس شاہد بلال حسن نے یہ عبوری حکم امتناعی ایک زمیندارمحمود مظفر کی درخواست پر جاری کیا ہے،درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ حکومت نے ایک طرف کسان پیکج اور کسانوں کی سہولت کے لئے قرضوں کا اعلان کیا ہے جبکہ دوسری طرف بلاجواز زرعی انکم ٹیکس کے نوٹیفکیشن بھجوائے جا رہے ہیں، پنجاب بھر میں ضلعی حکومتوں کے افسر بغیر کسی تخمینے کے کسانوں کو زرعی انکم ٹیکس کی ادائیگی کے نوٹسز بھجوا رہے ہیں، حکومت کسان دوستی کا مظاہرہ کرنے کی بجائے کسان دشمنی پر اتری ہوئی ہے، انہوں نے مزید موقف اختیار کیا کہ حکومت نے جو پیکج یا قرضہ کسانوں کو دیا ہے، اب زرعی انکم ٹیکس کی آڑ میں اس کی وصولی کی جا رہی ہے، انہوں نے استدعا کی کہ پنجاب بھر میں اس نوٹیفکیشن پر عملدرآمد روکا جائے اورحکومت کو زرعی انکم ٹیکس کی وصولی سے بھی روکا جائے، ابتدائی سماعت کے بعد عدالت نے زرعی انکم ٹیکس کے نوٹیفکیشن پر پنجاب بھر میں عملدرآمد روکتے ہوئے صوبائی حکومت سے دو ہفتوں میں جواب طلب کر لیا، عدالت نے زرعی انکم ٹیکس سے متعلق تمام درخواستیں بھی یکجا کرنے کی ہدایت کی ہے۔

مزید :

لاہور -