سانحہ کوئٹہ سے ہمارے عزم و حوصلے کمزور نہیں ہوئے،شہدا کا خون رائیگاں نہیں جانے دیا جائے گا :وزیر اعلیٰ بلوچستان ثناء اللہ زہری

سانحہ کوئٹہ سے ہمارے عزم و حوصلے کمزور نہیں ہوئے،شہدا کا خون رائیگاں نہیں ...
سانحہ کوئٹہ سے ہمارے عزم و حوصلے کمزور نہیں ہوئے،شہدا کا خون رائیگاں نہیں جانے دیا جائے گا :وزیر اعلیٰ بلوچستان ثناء اللہ زہری

  

کوئٹہ(نیوز ڈیسک)وزیراعلیٰ بلوچستان نواب ثناء اللہ خان زہری نے کہا ہے کہ سانحہ کوئٹہ جیسے واقعات دہشت گردی کے خلاف ہمارے عزم و حوصلے کو کمزور نہیں کر سکتے، ہم بزدل نہیں یہ جنگ ہم سب نے مل کر لڑنی ہے ، وکلاء برادری اور معاشرے کے تمام مکاتب فکر کے لوگ ہمارے ہاتھ مضبوط کریں، دہشت گرد ظالم لوگ ہیں اگر انہیں آج سختی سے نہ روکا گیا تو یہ مزید لوگوں کا ناحق خون بہائیں گے۔

بلوچستان ہائی کورٹ کے بار روم میں سینئر وکلاء سے ملاقات کرتے ہوئے وزیراعلیٰ بلوچستان نے کہا کہ دہشت گردوں نے میرے خاندان کو بھی نشانہ بنایا لیکن میرے ساتھ انصاف نہیں ہوا، اس وقت سب نے کہا کہ یہ نواب ثناء اللہ خان زہری کے ذاتی مسئلہ ہے، اگر اس وقت دہشت گردوں کے مزموم عزائم کا احساس کرتے ہوئے ان کے خلاف کاروائی کی جاتی تو شاید حالات اس نہج پر نہ پہنچتے، میں اپنے پیاروں کے جدا ہونے کے کرب سے گزرا ہوں لہذا مجھے شہداء کے لواحقین کے کرب کا احساس ہے میں جہاں بھی تعزیت کے لیے گیا ہوں میری آنکھیں نم ہوئی ہیں، شہداء اور زخمی میرے بھائی اور بیٹے ہیں ان کے لواحقین کو بے آسرا نہیں چھوڑوں گا ، شہداء کا خون رائیگاں نہیں جانے دیا جائیگا اور دہشت گردی کی جنگ کو منطقی انجام تک پہنچایا جائیگا۔انہوں نے کہاکہ شہید وکلاء کے لواحقین کے لئے پیکیج کوئی احسان نہیں یہ ہماری ذمہ داری اور فرض ہے جسے ہم نبھا رہے ہیں، ہم خودار لوگ ہیں اور اپنی حیثیت کے مطابق ورثاء کی بھرپور مدد اور معاونت فراہم کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم بزدل نہیں ہمارے آباؤ اجداد نے اس سرزمین کے لیے گردنیں کٹوائیں، ایک جانب پر شیئن ایمپائر تھے اور دوسری جانب انگریز سامراج لیکن ہمارے بزرگوں نے اس سرزمین کو بچا کر رکھا، انہوں نے کہا کہ سانحہ کوئٹہ 8اگست 2016 میرے لیے ایسا ہی ہے جیسے 16اپریل 2013 کے سانحہ کو دہرایا گیا ہو جس میں میرے بچے شہید ہوئے تھے، ہمیں ناحق مارا اور شہید کیا گیا ہے، لیکن بالآخر فتح حق کی ہوگی۔

مزید :

کوئٹہ -