پی پی اے ایف اور جرمن ترقیاتی بینک کے درمیان معاہدہ

پی پی اے ایف اور جرمن ترقیاتی بینک کے درمیان معاہدہ

لاہور(پ ر) پاکستان اور جرمنی کے درمیان ترقیاتی تعاون پر مشاورت کا آغاز ستمبر 2015 میں ہوا۔ اس ضمن میں چھوٹے طبقے کی آمدن میں تعاون اور اسکے فروغ کے پروگرام (ایل اے سی آئی پی) کے دوسرے مرحلے میں ایک کروڑ یورو فراہم کئے گئے ہیں۔ اس منصوبے کو تین سال میں مکمل کیا جائے گا جس کی بدولت تحصیل اور کونسل کی سطح پر دیہات کے لوگوں کو آمدن میں بہتری اور انفراسٹرکچر کی ترقی کے لئے بڑے پیمانے پر فیصلہ سازی میں مدد ملے گی۔ خیبرپختونخوا کے منتخب اضلاع میں اس پروگرام کو اس طرح تیار کیا گیا ہے جس سے مقامی سطح پر اصلاحات لانے میں مدد ملے گی۔ ایل اے سی آئی پی پروگرام کے پہلے مرحلے میں 31.5 ملین یورو فراہم کئے گئے اور یہ پروگرام دسمبر 2017 تک مکمل ہو جائیگا ۔پاکستان پاورٹی ایلیوئیشن فنڈ (پی پی اے ایف) نے ایل اے سی آئی پی پروجیکٹ کے لئے جرمن ترقیاتی بینک کے ایف ڈبلیو (KfW)کے ساتھ معاہدہ کیا ہے ، اس پروجیکٹ کے لئے کے ایف ڈبلیو نے سرمایہ فراہم کیا ہے۔ جرمن ترقیاتی بینک میں گورننس اینڈ پیس ڈیویژن کے حکام میں شامل ایلکے میٹزن نے حال ہی میں اسلام آباد کا دورہ کیا۔

اور اس منصوبے کے دوسرے مرحلے کے لئے دس ملین یورو کی مالیت کا نیا معاہدہ کیا ہے۔

ایلکے میٹزن نے اسلام آباد میں اپنے قیام کے دوران پی پی اے ایف کے شراکتی اداروں کے ساتھ تفصیلی مشاورت کی۔ ایل اے سی آئی پی پروگرام کے دوسرے مرحلے پر عمل درآمد کرانے کے لئے پی پی اے ایف کا کردار شامل ہوگا۔ اس ضمن میں پی پی اے ایف کی جانب سے پروگرام کے ڈیزائن، طریقہ کار اور عمل درآمد کی حکمت عملی کے بارے میں آگاہ کیا گیا ہے۔ایلکے میٹزن نے شانگلہ اور بونیر اضلاع کی مقامی حکومتوں کے نمائندوں کے ساتھ بھی ملاقاتیں کیں اور اس پروگرام کے بارے میں تفصیلات فراہم کیں جبکہ مختلف مسائل اور ان سے متعلق ممکنہ سہولیات پر بھی گفتگو ہوئی ۔

اس پروگرام کے ذریعے ڈیزاسٹر مینجمنٹ کی شمولیت سمیت انفراسٹرکچر کے مختلف منصوبوں پر کام کیا جائے گا۔ ماحولیات سے مطابقت کو بحال کیا جائے گا، اسے بہتر بنایا جائیگا اور بقدر ضرورت ازسرنو شکل دی جائے گی۔ اسی طرح آمدن میں بہتری لانے، مہارتوں کے لئے تربیت اور متعلقہ اثاثہ جات کی منتقلی پر بھی عمل درآمد کیا جائے گا۔

مزید : کامرس