ایرانی اکنامک قونصلر سید ابراہیم کی صدر سرحدچیمبر سے ملاقات

ایرانی اکنامک قونصلر سید ابراہیم کی صدر سرحدچیمبر سے ملاقات

پشاور(این این آئی)پشاور میں تعینات ایرانی قونصلیٹ کے سیکنڈ قونصل اکنامک سیکٹر سید ابراہیم دہنادی نے سرحد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سینئر نائب صدر محمد اقبال کو ایران کے شہر تہران میں 18 سے 20 ستمبرکو چوتھی بائیو ٹیکنالوجی ایران ایکسپو اور 31 اکتوبر سے 3 نومبر کو ایکسپورٹ کیپبلٹی ایگزیبیشنز میں شرکت کی دعوت دی ہے اور کہا ہے کہ سرحد چیمبران دونوں بڑی ایگزیشنز میں اپنے ممبران کی شرکت کو یقینی بنائے ۔ حکومت ایران سرحد چیمبر کے ممبران کو ڈومیسٹک ٹرانسپورٹیشن اور 2 سے 3 دن کی رہائش اور دیگر سہولیات فراہم کرے گی۔ سرحد چیمبر کے سینئر نائب صدر محمد اقبال نے ایران کے سیکنڈ قونصل اکنامک سیکٹر سید ابراہیم دہنادی کی جانب سے تہران میں ہونیوالی نمائشوں میں سرحد چیمبر کے ممبران کو شرکت کی دعوت دینے پر اُن کا شکریہ ادا کیا اور کہاکہ ایران پاکستان سے ایکسپورٹ ہونیوالی اشیاء کی فہرست سرحد چیمبر کو فراہم کرے تو سرحد چیمبر اس سلسلے میں متعلقہ ممبران سے رابطہ کرکے اُنہیں ایران کے ساتھ باہمی تجارت کے فروغ کیلئے بزنس ٹو بزنس میٹنگز اور روابط کیلئے اپنا کردار ادا کرے گا ۔ تفصیلات کے مطابق پشاور میں تعینات ایرانی قونصلیٹ کے سیکنڈ قونصل اکنامک سیکٹر سید ابراہیم دہنادی نے سرحد چیمبر کے سینئر نائب صدر محمد اقبال سے چیمبر ہاؤس میں ملاقات کی ۔ اس موقع پر سرحد چیمبر کے نائب صدر عابد اللہ خان یوسفزئی ٗ صدر گل اور فیض رسول بھی موجود تھے ۔ سرحد چیمبر کے سینئر نائب صدر محمد اقبال نے بات چیت کرتے ہوئے پاکستان اور ایران کے مابین باہمی تجارت کے فروغ کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے سمیت دونوں ممالک کے مابین بینکنگ سیکٹرکو فعال بنانے پر زور دیا

اور کہاکہ دونوں برادر اسلامی ممالک کے تعلقات صدیوں پر محیط ہیں اور ان ممالک کے درمیان تجارت کے فروغ سے دونوں ملکوں کی معیشت کو استحکام مل سکتا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ایرانی قونصلیٹ سرحد چیمبر کا ایک وفدسرکاری طور پر ایران بھجوائے اور ایران میں وزارت تجارت سمیت متعلقہ چیمبرز اور بزنس کمیونٹی کے ساتھ اُن کی میٹنگز کا اہتمام کرے تاکہ دونوں جانب کی بزنس کمیونٹی بالخصوص خیبر پختونخوا کی بزنس کمیونٹی کو ایران کے ساتھ تجارت کے فروغ میں سہولیات میسر آسکیں۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان اور ایران کے مابین صنعت و تجارت کے شعبے سمیت ہائیڈرل پاور جنریشن ٗ پیٹروکیمیکل ٗ آئل اینڈ گیس اور دیگر روایتی شعبوں میں سرمایہ کاری کے وسیع مواقع موجود ہیں۔ انہوں نے کہاکہ اس وقت دونوں ممالک کے درمیان ایک ارب ڈالر کی تجارت ہو رہی ہے جسے 5 ارب ڈالر تک لے جانے کی گنجائش موجود ہے ۔ انہوں نے ایرانی سرمایہ کاروں کو خیبر پختونخوا میں سرمایہ کاری کی دعوت بھی دی اور کہا کہ ایرانی قونصلیٹ ہمیں پاکستان سے ایکسپورٹ ہونیوالے آئیٹمز کی فہرست فراہم کرے تو ہم اس فہرست کو اپنے ممبران میں سرکولیٹ کریں گے تاکہ باہمی تجارت کو فروغ حاصل دیا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ایران کے ساتھ تعلقات کو بڑی اہمیت دیتا ہے اور اس ناطے سے خیبر پختونخوا کی بزنس کمیونٹی ایران کے ساتھ تجارتی تعلقات کے فروغ خواہش مند ہے ۔ پشاور میں تعینات ایرانی قونصلیٹ کے سیکنڈ قونصل اکنامک سیکٹر سید ابراہیم دہنادی نے سرحد چیمبر کے سینئر نائب صدر محمد اقبال کی سفارشات سے مکمل طور پر اتفاق کیا اور کہا کہ ایران سے اقتصادی پابندیاں اٹھنے کے بعد پاکستان اور ایران کے مابین باہمی تجارت کے فروغ کے وسیع مواقع موجود ہیں او ر ایران اس سلسلے میں عملی اقدامات بھی اٹھا رہا ہے ۔ انہوں نے روایتی اور غیر روایتی شعبوں میں تعاون پر اتفاق کیا اور کہا کہ پرائیویٹ سیکٹر اس سلسلے میں اپنا موثر کردار ادا کرسکتا ہے۔

مزید : کامرس