سروسز ہسپتال بندکرانے کا منصوبہ ناکام ،آؤٹ ڈور بھی کھل گیا100جونیئر ڈاکٹروں کی واپسی

سروسز ہسپتال بندکرانے کا منصوبہ ناکام ،آؤٹ ڈور بھی کھل گیا100جونیئر ڈاکٹروں ...

لاہور(جنرل رپورٹر) سروسز انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز کے پرنسپل پروفیسرمحمود ایاز نے پروفیسرز اور ایم ایس ڈاکٹر ا میر کے ساتھ مل کر ینگ ڈاکٹرز کی طرف سے سروسزہسپتال بند کرانے کا منصوبہ ناکام بنا دیا پرنسپل نے آؤٹ ڈور بھی کھلوا دیا آپریشن تھیٹرز میں ینگ ڈاکٹرز کے بائیکاٹ کے باوجود درجنوں مریضوں کے کامیاب آپریشن کرائے پرنسپل کی اس کامیاب حکمت عملی کے باعث سو سے زائد جونیئر ڈاکٹرزڈیوٹی پر واپس آ گئے گزشتہ روز پرنسپل کو اطلاع ملی کہ ینگ ڈاکٹر زبردستی ہسپتال بند کرانا چاہتے ہیں آپریشن تھیٹرز اور آؤٹ ڈور کو تالے لگوانا چاہتے ہیں اوراحتجاج کرنا چاہتے ہیں جس پر پر نسپل محمود ایاز خود تمام پروفیسرز اور ایم ایس کے ہمراہ صبح سویرے ہی ہسپتال پہنچ گئے اور تمال پروفیسرز کو تمام وارڈوں اور آؤٹ ڈو رز میں ڈیوٹیاں تقسیم کر دیں خود پورے ہسپتال میں دورے کرتے رہے اس دوران وائی ڈی اے کے درجنوں ڈاکٹرز نے پرنسپل کا گھیراؤ کیا مگر پرنسپل ایم ایس کے ہمراہ ہر جگہ پہنچ جاتے اور ڈاکٹرز کو ان کے حلف کی یاد دہانی کراتے رہے، ایک موقع پر وائی ڈی انے نے جب مین آپریشن تھیٹر بند کرانا چاہا تو پرنسپل خود تھیٹر کے دروازے کے آگے کھڑے ہو گئے اور کہا کہ میں مریضوں کی زندگیوں سے کھیلنے کی اجازت نہیں دے سکتا کسی ڈاکٹر نے زبردستی کی تو قانون حرکت میں آئے گا اور پولیس بلاؤں گا اس دوران پروفیسر رانا ارشد, پرویسر جاوید گردیزی، ڈاکٹر سلیم شہزاد چیمہ، پروفیسر وارث فاروق سمیت دیگر ڈاکٹرز بھی موقع پر پہنچ گئے جو پرنسپل کے ساتھ کھڑے ہو گئے جس پر وائی ڈی اے کے ڈاکٹرز وہاں سے نعرے بازی کرتے ہوئے چلے گئے ، پرنسپل پروفیسر محمود ایاز نے پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کسی ڈاکٹر کو قانون ہاتھ میں لینے یا مریض کی زندگی سے کھیلنے کی اجازت نیں دے سکتے ڈاکٹرز میری اولاد کی طرح ہیں وہ نافرمان اولاد کا روپ اختیار نہ کریں ورنہ ان سے وہی سلوک ہو گا جو بے ادب اولاد سے ہوتا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1