پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا اجلاس،246ارب 90کروڑ کے نا دہندگان فوت یا کاروبار بند کر گئے ،آڈٹ حکام کا انکشاف

پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا اجلاس،246ارب 90کروڑ کے نا دہندگان فوت یا کاروبار بند کر ...

اسلام آباد(اے این این ) قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ حکمران غریب عوام کا تیل نکال کر سر پر لگا رہے ہیں لیکن بال پھر بھی نہیں نکلیں گے۔اسلام آباد میں پبلک اکاونٹس کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے چیئرمین سید خورشید شاہ نے کہا کہ ملک میں 80فیصد صارفین کا تعلق غریب طبقے سے ہے، اس کے باوجود حکومت 35روپے لیٹر والا تیل عوام کو 80روپے لیٹر میں فروخت کررہی ہے اور غریب صارف کو دو روپے یونٹ والی بجلی سات روپے یونٹ میں بیچی جارہی ہے جبکہ سی پیک کی سیکیورٹی کے نام پر بجلی صارفین سے 17ارب روپے وصول کئے جارہے ہیں۔اجلاس میں وزارت پانی و بجلی کے2012-13کے 5کروڑ روپے سے زائد کے بقایاجات کا جائزہ لیا گیا۔ آڈٹ حکام نے بتایا کہ ایسے بڑے نادہندگان کے ذمہ 246ارب 90کروڑ روپے کے بقایہ جات ہیں جو فوت ہو گئے یا کاروبار بند کر گئے ہیں۔قومی اسمبلی میں ایم کیو ایم پاکستان کے پارلیمانی لیڈر رشید گوڈیل نے کہا کہ آپ لوگ غریب کو تو چھوڑتے نہیں جب کہ امیروں کے قرضے معاف کرنے کیلئے ان کا کاروبار بند ہونے کا انتظار کرتے ہیں۔

آڈٹ حکام

مزید : علاقائی