پاکستانی مدر ٹریساما دام روتھ فاؤ انتقال کر گئیں،آنجہانی انسانیت کی سفیر تھیں:آرمی چیف ،پیدا تو جرمنی میں ہوئیں دل پاکستان میں دھڑکتا تھا:وزیر اعظم

پاکستانی مدر ٹریساما دام روتھ فاؤ انتقال کر گئیں،آنجہانی انسانیت کی سفیر ...
 پاکستانی مدر ٹریساما دام روتھ فاؤ انتقال کر گئیں،آنجہانی انسانیت کی سفیر تھیں:آرمی چیف ،پیدا تو جرمنی میں ہوئیں دل پاکستان میں دھڑکتا تھا:وزیر اعظم

  

کراچی( سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)پاکستان میں کوڑھیوں (جذام)کے مریضوں کی مسیحا مادام ڈاکٹر روتھ فا ؤ 88 سال کی عمر میں دارفانی سے کوچ کر گئیں ، مادام ڈ ا کٹر روتھ فاؤ کچھ عرصہ سے شدید علالت کے باعث نجی ہسپتال کے انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں داخل تھیں،انکی آخری رسومات 19 اگست کو سینٹ پیٹر کس چرچ میں ادا کی جائیں گی۔ جرمنی سے شرکت کیلئے عزیزواقارب بھی پاکستان آئیں گے، ڈاکٹررتھ فاؤ کی تدفین گورا قبرستان میں کی جائے گی۔ انہوں نے اپنی حیات ہی میں پاکستان میں تدفین کی وصیت کی تھی۔ جرمنی میں پید ا ہونیوالی ڈاکٹرفاؤ نے 1960 میں پاکستان میں جذام کے خاتمے کیلئے کوششیں شروع کیں اور اپنی آخری سانس تک جذام کے خاتمے کیلئے پاکستان میں ہی رہیں۔جذام کے مریضوں کی بے مثال مسیحا مادام ڈاکٹر روتھ فاؤ ناسازی طبیعت کے باعث کراچی کے نجی ہسپتال میں زیرعلاج تھی۔ ڈاکٹروں کے مطابق رتھ فاؤ کے پھیپھڑے کمزور ہونے کے باعث انہیں سانس لینے میں دشواری ہو رہی تھی۔مادام ڈاکٹر روتھ فاؤ 9 ستمبر 1929 میں جرمنی میں پیدا ہوئیں، 1960 میں پاکستان میں جذام کے مریضوں پر بنی ایک دستاویزی فلم دیکھی جس کے بعد وہ پاکستان آگئیں۔ 60 کی دہائی میں پاکستان میں جذام کے ہزاروں مریض تھے، اس وقت سہو لتیں اور علم کی کمی کی وجہ سے جذام کو لا علاج اور مریض کو اچھوت سمجھا جاتا تھا۔ پاکستان میں جذام کے مریضوں کی حالت دیکھنے کے بعد ا نہوں نے واپس نہ جا نے کا فیصلہ کیا۔ ڈاکٹر روتھ فاؤ نے کراچی میں میری ایڈیلیڈ لیپروسی سینٹر کے نام سے ایک شفاخانہ بنایا جہاں مر یضوں کا علاج ہونے لگا، ان کی بے لوث کاوشوں کے باعث پاکستان سے اس موذی مرض کا خاتمہ ممکن ہوا، انہیں 1988 میں پاکستان کی شہر یت ملی۔مادام ڈاکٹر رو تھ فاؤ کو حکومت پاکستان جرمنی اور عالمی اداروں نے متعدد اعزازات سے بھی نوازا، اپنی جوانی اور بڑھاپا سب جذ ا م کے مرض کے خا تمے کیلئے وقف کر دینے والی مادام ڈاکٹر روتھ فاؤ کو پاکستان کی مدر ٹریسا بھی کہا جاتا ہے۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے پاکستان میں جذ ا م کے مریضوں کیلئے اپنی تمام زندگی وقف کر دینے والی ڈاکٹر روتھ فاؤ کو انسانیت کی سفیر قرار دیتے ہوئے کہا ہے ڈاکٹر روتھ فاؤ نے پا کستانی عوام کی بے پناہ خدمت کی، انہیں دعاؤں میں ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔ڈاکٹر روتھ فاؤ جرمن نژاد پاکستانی ڈاکٹر ہیں جنہو ں نے اپنی زندگی کے 57 سال پاکستان میں جذام کے مریضوں کی خدمت کرتے ہوئے گزار دیئے۔ ان کی انتھک کوششوں کی وجہ سے پاکستان کو 1996ء میں جذام پر قابو پانے والا ملک قرار دیا گیا تھا۔ڈاکٹر روتھ فاؤ کو انسانیت کی سفیر کے طور پر ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔ ڈا کٹر رتھ فاؤ کی گرانقدر خد مات پرانہیں ہلال پاکستان، ستارہ قائداعظم، ہلالِ امتیاز، جناح ایوارڈ اورنشان قائداعظم سے نوازا گیا جبکہ ڈا کٹر رتھ فا کو جرمن حکومت نے بیم بی ایوارڈ اور آغا خان یونیورسٹی نے ڈاکٹرآف سائنس کا ایوارڈ دیا۔مادام ڈاکٹررتھ فاؤ کی آخری رسو ما ت 19اگست کوسینٹ پیٹرک چرچ صدرمیں اداکی جائیں گی۔وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے ڈاکٹررتھ فا کے انتقال پراظہار افسوس کر تے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر رتھ فاؤ پیدا تو جرمنی میں ہوئیں لیکن انکا دل پاکستان میں دھڑکتا تھا، ان کی پاکستان میں طب کے شعبے میں خدمات پرخراج تحسین پیش کرتا ہوں۔انہوں نے مادام روتھ فاؤ کی تدفین سرکاری اعزاز کیساتھ کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ آنجہانی نے بے شمار لوگوں کو امید کی کرن دی ہے، ہمیں روتھ فاؤ کی بے مثال خدمات پر فخر ہے،وہ ہمیشہ ہمارے دلوں میں زندہ رہیں گی۔

مادام روتھ فاؤ

کراچی (سٹاف رپورٹر) وزیرا علی سندھ سید مراد علی شاہ نے وفاقی حکومت سے مادام سسٹر روتھ کیتھرینا مارتھا فاؤکی سرکاری اعزاز کیساتھ تدفین کی اجازت مانگ لی ۔ وفاقی حکومت کو بھیجے گئے ایک خط میں انہوں نے سسٹر روتھ کیتھرینا مارتھافاؤ کے انتقال پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے انہوں نے پاکستان میں جذام کے مرض کیخلاف 57سال جدوجہد کی اور 1996میں ورلڈ ہیلتھ آر گنا ئز یشن نے پاکستان کو پہلا جذام فری ایشیائی ملک قرار دیا۔ وزیراعلی سندھ نے اپنے خط میں مزید کہا ہے کہ مادام روتھ کیتھرینا مارتھا فاؤکو ان کی نمایاں خدمات کی بدولت متعدد اسناد اور ایوارڈز سے بھی نوازا گیا، حکومت پاکستان نے انہیں ستارہ پاکستان ، ہلالِ پاکستان اور ہلال امتیاز سے نوازا،تاہم صوبہ سندھ حکومت کی خواہش ہے صدر پاکستان آنجہانی کی سرکاری اعزاز کیساتھ تدفین اور آخری رسومات کی ادائیگی کی اجازت دیں۔واضح رہے آنجہانی مادام روتھ فاؤکی آخری رسومات بروز ہفتہ 19اگست سینٹ پیٹرکس کیتھی ڈرال صدر کراچی میں ادا کی جائیں گی اور ان کی کرسچن سیمیٹری کراچی میں تدفین کی جائے گی۔ ادھرپاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے 1960 سے جذام کے مرض کیخلاف تادمِ مرگ لڑائی لڑ نیو الی جرمن نژاد پاکستانی خاتون معالج مادام ڈاکٹر روتھ کیتھرینا مارتھ فاؤ کی بیش بہا خدمات پرانہیں زبردست خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے ان کے انتقال پر گہرے دکھ و افسوس کا اظہار کیا ہے۔ اپنے تعزیتی پیغام میں چیئرمین پی پی پی نے کہا کہ ڈاکٹرروتھ فاؤ نے اپنی تمام زندگی پاکستان میں جذام کے مریضوں کی خدمت کرتے گذاری، پاکستانی قوم آنجہانی کی شکرگزار ہے اور رہے گی ،مادام کی اپنی پوری زند گی وطن عزیزکے لوگوں کی خدمت کرنے کیلئے وقف کرنا ناقابل فراموش ہے ، ڈاکٹرروتھ فاؤ کو ہر پاکستانی ہمیشہ یاد رکھے گا اور ان کی وارث پوری قوم ہے۔

مزید : صفحہ اول