ہائیکورٹ نے بہاء الدین زکریایونیورسٹی کے معطل پروفیسر ڈاکٹر اسحاق فانی کو بحال کر دیا

ہائیکورٹ نے بہاء الدین زکریایونیورسٹی کے معطل پروفیسر ڈاکٹر اسحاق فانی کو ...

ملتان( سٹاف رپورٹر)ہائیکورٹ نے بہاء الدین زکریایونیورسٹی کے معطل پروفیسر ڈاکٹر اسحاق فانی کو بحال کر دیا۔ لاہور ہائی (بقیہ نمبر58صفحہ12پر )

کورٹ ملتان بنچ کے سینئر جج جسٹس محمد امیر بھٹی نے سنڈیکیٹ بہاء الدین زکریا ملتان کے 22 جولائی 2017 ء کے فیصلے کو جس میں پروفیسر ڈاکٹر محمد اسحاق فانی کی معطی کی مدت میں مزید90 دن کے لئے اضافہ کیا گیا تھا کو کالعدم کر کے فوری طور بحال کر دیا ہے۔ درخواست گذار پروفیسر ڈاکٹر محمد اسحاق فانی نے سینئر ایڈوکیٹ محمد مسعود بلال کی وساطت سے لاہور ہائی کورٹ ملتان بنچ میں رٹ نمبر17/ 11004 دائر کی جس میں موقف اختیار کیا کہ اسے سنڈیکیٹ نے جولائی 2016 کو90 دن کے لئے غیر قانونی طور پر معطل کیا بعد ازاں 2 نومبر 2016ء کو دوبارہ مزید 90دن کے لئے فروری 2017ء تک وائس چانسلرڈاکٹر طاہرامین نے اپنے خصوصی اختیارات کے ذریعے توسیع کر کے سنڈیکیٹ سے منظوری لی ۔ 2 فروری 2017 کو مدت مکمل ہونے کے بعد معطلی میں توسیع نہیں کی گئی ۔پیڈا ایکٹ کے تحت اگر مدت ختم ہونے کے ایک ماہ کے اندر معطلیی میں توسیع نہ کی جائے تو معطل شدہ آدمی خود بخود بحال ہوجاتا ہے۔ اس لئے درخواست گذار فروری 2017 سے بحال تھا۔ لہذا سنڈیکیٹ دوبارہ معطلی میں توسیع نہیں کر سکتی۔ یہ کیسے ممکن ہے کہ ایک بحال شدہ شخص کی معطلی میں میں تو سیع کی جائے۔ لہذا سنڈیکیٹ نے 22 جولائی 2017 کو غیر قانونی طور پر اپنے اختیارات سے تجاوز کر کے اس کی معطلی میں توسیع کی ہے۔ لہذا سنڈیکیٹ کے 22جولائی 2017 کے غیر قانونی فیصلے کو کالعدم قرار دیا جائے۔ فاضل جج جسٹس محمد امیر بھٹی نے وکیل کے دلائل سے اتفاق کرتے ہوئے سنڈیکیٹ کے 22 جولائی 2017 کے فیصلے کو معطل کرتے پروفیسر ڈاکٹر محمد اسحاق فانی و فوری طور پر بحال کرنے کے احکامات جاری کر دئیے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر