باجوڑ تحصیل سلارزئی میں صدیوں پرانی فوسودہ روایت کے خاتمے کیلئے مشران کا کامیاب جرگہ

باجوڑ تحصیل سلارزئی میں صدیوں پرانی فوسودہ روایت کے خاتمے کیلئے مشران کا ...

باجوڑ ایجنسی (روزنامہ پاکستان) گزشتہ روز سول کالونی جرگہ ہال میں تحصیل سلارزئی لر آمدک ،بر آمدک،لرسدین اور بر سدین کے عمائدین، ملکان ، مشران اور سیاسی افراد پر مشتمل ایک جرگے کا انعقاد ہوا جس میں اسسٹنٹ پولٹیکل ایجنٹ خار عارف خان ،پولٹیکل تحصیلدار سلارزئی ساز محمد و دیگر نے شرکت کی جرگے سے خطاب کرتے ہوئے پی ٹی آئی کے رہنماء انور زیب خان نے اپنے خطاب میں کہا کہ گزشتہ کئی صدیوں سے تحصیل سلارزئی میں لوگوں کے زرخرید اور آبائی اراضیوں پر مکانات کی تعمیر پر پابندی کیوجہ سے شدید مشکلات کے شکار ہیں چونکہ 22 جولائی پر تحصیل سلارزئی کے علاقے علاقہ کوہی میں با پ بیٹے کو اس وجہ سے فائرنگ کرکے قتل کیا گیا جب وہ اپنے زرخرید اراضی پر مکان تعمیر کرنا چاہتے تھے چونکہ یہ فرسودہ روایت علاقے میں بد امنی اور دشمنیوں کا باعث بن رہا ہے اس موقع پر تحصیل سلارزئی کے مشران ،عمائدین ، مسلم لیگ ن کے نظام الدین خان ،ملک حفظ الرحمان ،ملک غلام رسول ،ملک عبد الناصر ،ملک عبد الرحیم ،پیپلز پارٹی کے اورنگ زیب انقلابی ،شہاب الدین شہاب ،حاجی خان بہادر و دیگر نے متفقہ طور پر اس فرسودہ روایت کے خاتمے کیلئے ایک تحریری معاہدہ کیا کہ تحصیل سلارزئی میں ہر شخص کو اختیار حاصل ہوگا کہ وہ اپنی زرخرید اور آبائی اراضیوں پر مکانات تعمیر کر سکتے ہیں البتہ جن قوموں کیدرمیان دشمنی کیدوران قومی جرگوں نے جو حدودات مقرر کئے تھے وہ بر قررار رہیں گے یاد رہے کہ پولٹیکل ایجنٹ باجوڑ عا مر خٹک نے تحصیل سلارزئی میں مکانات کی تعمیر سے روکھنے اور قتل کرنے والے باپ بیٹے کے واقعے پر سخت رد عمل کا اظہار کیا تھا جرگے نے متفقہ طور پر واقعے میں ملوث پانچ افراد کو پولٹیکل انتظامیہ کے حوالے کیا ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر