عوام کے 44ارب روپے ہڑپ کرجانیوالے شخص کیخلاف بالآخر حکم دیدیا گیا

عوام کے 44ارب روپے ہڑپ کرجانیوالے شخص کیخلاف بالآخر حکم دیدیا گیا
عوام کے 44ارب روپے ہڑپ کرجانیوالے شخص کیخلاف بالآخر حکم دیدیا گیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)ایمپلائز اولڈایج بینیفٹس انسٹی ٹیوشن (ای او بی آئی) کے سابق چیئرمین اور آڈٹ اینڈو اکاﺅنٹس سروس کے آفیسر ظفراقبال گوندل کوکرپشن سکینڈل میں نوکری سے برطرف کردیاگیاجس کا نوٹیفکیشن بھی جاری کردیاگیا۔

وزیراعظم ہاﺅس کی طرف سے جاری اعلامیہ کے مطابق گورنمنٹ سرونٹ رولز 1973ءکی خلاف ورزی کرتے ہوئے ظفراقبال گوندل مس کنڈکٹ اور کرپشن کے مرتکب پائے گئے اور اس وجہ سے ان کو  نوکری سے ہی برطرف کردیاگیا، متعلقہ انکوائری آفیسر نے بھی یہی سزا تجویز کی تھی ۔ ظفراقبال گوندل کیخلاف سنجیدہ نوعیت کے الزامات اور مالی بدعنوانی ثابت ہونے پر متعلقہ انکوائری آفیسر نے بھاری سزا یعنی نوکری سے ہی فارغ کرنے کی سفارش کی تھی ، ظفراقبال گوندل کیخلاف دستاویزی شواہد واضح ہیں اور ثابت شدہ ہیں۔

اعلامیہ میں یہ بھی بتایاگیاکہ کارروائی کے دوران ظفراقبال گوندل ہرمرحلے میں تاخیری حربے استعمال کرتے رہے ۔یادرہے کہ ظفراقبال گوندل ای او بی آئی کے 44بلین روپے کے سکینڈل کے ملزم تھے لیکن 2013ءمیں پیپلزپارٹی کی حکومت کے خاتمے کیساتھ ہی ظفراقبال گوندل روپوش ہوگئے تھے تاہم بعد ازاں سپریم کورٹ کی طرف سے درخواست ضمانت خارج کیے جانے پر ایف آئی اے نے ظفراقبال گوندل کو حراست میں لے لیاتھا۔

مزید : اسلام آباد