ریاستی اداروں کیخلاف بیانات پر فضل الرحمان کا ساتھ نہین دے سکتے : بلاول بھٹو

ریاستی اداروں کیخلاف بیانات پر فضل الرحمان کا ساتھ نہین دے سکتے : بلاول بھٹو

کراچی(سٹاف رپورٹر)پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو نے کہا ہے اداروں کیخلاف بیانات پر پیپلزپارٹی فضل الرحمان کا ساتھ نہیں دے سکتی، خورشید شاہ، شیری رحمان و دیگر مولانافضل الرحمان سے بات چیت کریں۔چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو کی زیرصدارت اجلاس کی اندرونی کہانی سامنے آگئی ، بلاول بھٹو زردای نے مولانا فضل الرحمان کے بیانات پر تحفظات کا اظہار کر دیا۔ انہوں نے کہا اپوزیشن اتحاد میں صرف انتخابی دھاندلی پر بات کی جائے، اداروں کیخلاف کسی بیان کا حصہ نہ بنا جائے، پارلیمنٹ کے اندر موثر احتجاج اور قانونی طریقہ اپنایا جائے۔بعد ازاں اقلیتوں کے دسویں قومی دن کی مناسبت سے جاری کردہ اپنے بیان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا غیرمسلم بھی پاکستان میں برابر کے شہری ہیں اور بطور ملک کے نظریئے کی حقیقی وارث ہونے کے دستورِ پاکستان کیساتھ ساتھ پیپلز پارٹی بھی اقلیتوں کے حقوق کی ضامن ہے۔ ملک میں پہلی بار تین اقلیتی امیدواران کو عام انتخابات 2018کیلئے پیپلز پارٹی نے جنرل نشستوں کیلئے ٹکٹ دیئے، جن میں سے ڈاکٹر مہیش ملانی 1970 کے بعد قومی اسمبلی کی جنرل نشست پر منتخب ہونیوالے پہلے غیرمسلم رکن ہیں، جبکہ ہری رام کشوری لال اور گیانچند ایسرانی بھی سندھ اسمبلی کی جنرل نشستوں پر منتخب ہوئے ہیں، جو ایک نئی مثال ہے۔ یہ پاکستان پیپلز پارٹی ہی تھی، جس نے سینیٹ میں غیرمسلموں کیلئے چار نشستیں مخصوص کروائیں اور خود اس نے تین غیرمسلم سینیٹرز کو منتخب کروایا، پیپلز پارٹی کے دیرینہ مسیحی کارکن انور لال ڈین سندھ سے اقلیتوں کی مخصوص نشستوں پر سینیٹر منتخب ہوئے۔ آنیوالی نئی سندھ اسمبلی میں فقط ایک مسیحی ایم پی اے انتھونی نوید ہوگا، جس کا تعلق بھی پاکستان پیپلز پارٹی سے ہے۔ ہمیں اس بات پر بھی فخر ہے 1994میں شہید محترمہ بینظیر بھٹو سندھ میں اقلیتی امور کیلئے ایک مکمل وزارت کا قیام عمل میں لائیں اورگزشتہ 24 سالوں میں کسی دوسرے صوبے نے اس طرح کا اقدام نہیں کیا۔ حال ہی میں قانون بننے والا سندھ ہندو میریج بل بھی پیپلز پارٹی کی گزشتہ صوبائی حکومت کے دوران سندھ اسمبلی نے اتفاق رائے سے منظور کیا، جبکہ 2009 میں صدر آصف علی زرداری نے 11اگست کو ہر سال بطور اقلیتوں کا قومی دن منانے کا اعلان کیا، یہ وہی تاریخ ہے جب 1947 میں قائداعظم محمد علی جناح ؒ نے اپنی مشہورِ زمانہ تقریر کی تھی، جس میں انہوں نے کہا تھا پاکستان کی نئی ریاست میں اقلیتوں کو مساوی حقوق حا صل ہونگے۔ پیپلز پارٹی قائداعظم ؒ کے نظریئے کی حقیقی علمبردار ہے،پاکستان کو مساوات، پرامن، خوشحال اور ترقی پسند ملک بنانے کیلئے جدوجہد کرتی رہے گی۔

بلاول بھٹو

مزید : صفحہ اول