شادی ہالوں سے اضافی ٹیکس وصولی کااقدام ہائیکورٹ میں چیلنج

شادی ہالوں سے اضافی ٹیکس وصولی کااقدام ہائیکورٹ میں چیلنج

لاہور(نامہ نگار خصوصی) فنانس ایکٹ میں ترمیم اور شادی ہالوں سے اضافی ٹیکس وصولی کا اقدام لاہورہائیکورٹ میں چیلنج کر دیا ،اس سلسلے میں راؤطارق اسلام نامی شہری اور لائیرز فاؤنڈیشن فار جسٹس کی جانب سے درخواستیں دائر کی گئی ہیں جن میں وفاقی حکومت سمیت وزارت خزانہ اور دیگر کو فریق بنایا گیا ہے ۔درخواستوں میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ فنانس ایکٹ میں ترامیم کرکے شہریوں سے اضافی ٹیکس وصول کیا جا رہا ہے، درخواست میں نشاندہی کی گئی ہے کہ فنانس ایکٹ میں ترامیم کی آڑ میں شادی ہالز سے اضافی چارجز وصول کئے جا رہے ہیں، درخواست گزار نے مزیدکہا ہے کہ فنانس ایکٹ میں ترمیم آئین و قانون کے منافی ہے، شادی ہالز پر لگایا گیا ٹیکس نہ صرف غریبوں کی خوشیوں پر ڈاکہ ہے بلکہ فنانس ایکٹ میں ترمیم سے شادی ہالز کا کاروبار ٹھپ ہونے کا خدشہ ہے، درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ شادی ہالوں سے اضافی ٹیکس وصولی سے روکے اور فنانس ایکٹ میں ترامیم کو کالعدم قرار دیا جائے۔

شادی ہالز

مزید : صفحہ آخر