سنی تحریک کا ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کی نمائش کیخلاف ملک گیریوم مذمت

سنی تحریک کا ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کی نمائش کیخلاف ملک گیریوم مذمت

راولپنڈی(سٹی رپورٹر)پاکستان سنی تحریک نے ہالینڈمیں گستاخانہ خاکوں کی نمائش کے خلاف جمعہ کوملک گیر یوم مذمت منایا اورجڑواں شہروں سمیت ملک بھرکی مساجد میں خطباتِ جمعہ کے دوران گستاخانہ خاکوں کی نمائش کے اعلان کے خلاف مذمتی قرار دادیں منظور کی گئیں جبکہ کئی شہروں میں پرامن احتجاجی مظاہرے بھی کیے گئے،پاکستان سنی تحریک کے رہنماؤں مفتی لیاقت علی رضوی، علامہ عطاء الرحمن دھنیال، علامہ طاہراقبال چشتی، علامہ وسیم عباسی، علامہ عمران نظامی، علامہ شوکت حسین نقشبندی،علامہ نثاراحمدنوری،ڈاکٹرطیب رضا، علامہ امانت علی حیدری،علامہ بشیرنقشبندی،علامہ قاسم محمودموہڑوی،قاری رضوان رضوی،حافظ ہارون علی چشتی ودیگرنے جمعہ کے بڑے اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ہالینڈکی فریڈم پارٹی کے سربراہ ملعون گیرٹ وائلڈرزکی جانب سے توہین آمیز خاکے شائع کرنے کا اعلان بد ترین انتہا پسندی ہے ،گستاخانہ خاکوں کی نمائش دنیا کو عالمی جنگ میں جھونکنے کی سازش ہے،عالمی برادری شیطانی نمائش کو رکوانے کیلئے اپنا بھرپور کردار ادا کرے،مذموم اعلان سے پوری دنیا کے ڈیڑھ ارب سے زائدمسلمانوں کے جذبات کو ٹھیس پہنچائی گئی، گستاخانہ خاکوں کی نمائش کے خلاف او آئی سی کا ہنگامی اجلاس بلاکرہالینڈکامتفقہ بائیکاٹ کیاجائے،نگران پاکستانی حکومت کی جانب سے ڈش سفیر کودفترخارجہ طلب کرکے محض احتجاج ریکارڈ کراناکافی نہیں بلکہ ہالینڈ کے سفیر کو فوری ملک بدرکرنے کا اعلان کیاجائے،گستاخانہ خاکوں کی نمائش امت مسلمہ کی غیرت کیلئے چیلنج ہے،ہر مسلمان ناموس رسالت ﷺ کے تحفظ میں جان قربان کرنے کیلئے تیار ہے، آزادئ اظہار رائے کا مطلب کسی دوسرے کی آزادی پر ضرب لگانا ہر گز نہیں ہے ، فرانس میں مساجد کی تعمیر، داڑھی رکھنے اور حجاب پرپابندی بھی انتہا پسندی ہے،یورپی یونین کو اسکا فوری نوٹس لینا چاہئے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر