نشہ کی غیر قانونی علاج گاہ سمیت37عطائیوں کے اڈے بند

نشہ کی غیر قانونی علاج گاہ سمیت37عطائیوں کے اڈے بند

لاہور (جنرل رپورٹر)پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن نے نشے کے عادی افراد کی بحالی کے لیے قائم غیر قانونی مرکز کوگزشتہ روزسربمہر کر دیا،جبکہ عطائیوں کے خلاف کارروائی میں 37عطائیوں کے کاروباربھی سیل کر دیے۔تفصیلات کے مطابق ملتان روڈ پر واقع ایک گھر میں قائم مرکز پر چھاپہ مار کر 22افراد کو بازیاب کروایاگیا،جن کو علا ج کے بہانے قید کیا گیا تھا۔اس نام نہاد مرکز پرعلاج ومعالجہ کی کوئی سہولت میسر نہ تھی اور قیام وطعام کا بھی مناسب انتظام نہیں تھا۔تین منتظمین کو گرفتار کر کے مقدمہ درج کر لیا گیاہے۔بازیاب کیے گئے افراد کو طبی معائنے کے بعد ان کے سرپرستوں کے حوالے کر دیا گیا۔ مزید برآں کمیشن کی ٹیموں نے لاہور،راولپنڈی ،سیالکوٹ اورنارووال میں انتظامیہ اور پولیس کے ساتھ مل کر عطائیوں کے خلاف کارروائی کی۔ ٹیموں نے ان شہروں کے مختلف علاقوں میں ریکارڈ کے مطابق 131علاج گاہوں پرچھاپے مارے اور 37 عطائیت کے مراکزکو بندکر دیا گیا جبکہ 42عطائیوں نے دوسرے کاروبار شروع کر دیے ہیں ۔ نارووال میں 11، سیالکوٹ اورراولپنڈی ہر ایک میں سات،جبکہ لاہور اور بہاولنگر ہر ایک میں چھ کاروبار سیل کیے گئے

نشہ علاج گاہ

مزید : میٹروپولیٹن 1