ایران پر بڑھتا ہوا امریکی دباؤ، خلیجی ممالک نے بھی مکمل حمایت کردی

ایران پر بڑھتا ہوا امریکی دباؤ، خلیجی ممالک نے بھی مکمل حمایت کردی
ایران پر بڑھتا ہوا امریکی دباؤ، خلیجی ممالک نے بھی مکمل حمایت کردی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

واشنگٹن(این این آئی)ایران کے خلاف نئی معاشی پابندیاں اس ہفتینافذ ہوئیں جس کا ہدف اسلامی جمہوریہ کی کارساز صنعت ہے، ساتھ ہی امریکی ڈالر کی خرید اور سونے کی تجارت کی ایران کی استعداد پر ضرب لگانا ہے۔یورپی یونین، روس اور چین کے ساتھ ساتھ عراق نے اِن نئی امریکی تعزیرات کی وسیع طور پر تنقید کی ہے۔تاہم، ایران کے ہمسائے سعودی عرب، بحرین اور متحدہ عرب امارات بڑی حد تک خاموش ہیں، حالانکہ وہ ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے اختیار کردہ بڑھی ہوئی محاذ آرائی پر مبنی انداز کی زیادہ تر حمایت کرتے ہیں۔

واشنگٹن ڈی سی میں تعینات متحدہ عرب امارات کے سفیرنے بتایا کہ ایران کو پتا ہونا چاہیئے کہ اْس کے اقدامات پر اْس کی پکڑ ہوتی ہے۔العتیبہ نے کہا کہ ایران کے رویے کا موازنہ نتائج سے کیا جائے۔ یہ نتائج کیا ہیں؟ یہ بات ہمیں مل کر سوچنی چاہیئے۔سعودی وزیر خارجہ عبد الجبیر نے خطے میں فرقہ وارایت اور دہشت گردی کی حمایت پر تشویش کا اظہار کیا۔الجبیر نے کہا کہ ہم ملکوں کے اقتدار اعلیٰ پر یقین رکھتے ہیں۔ اس لیے، ہم عرب ملکوں کے امور میں ایران کی مداخلت کو مسترد کرتے ہیں؛ علاوہ ازیں، وہ فرقہ وارانہ تناؤ اور دہشت گردی کی حمایت کرتا ہے۔

مزید : بین الاقوامی