’ہماری بیٹی کو اس کے شوہر نے ہنی مون پر قتل کروادیا کیونکہ اسے پتہ چل گیا تھا کہ وہ چھپ کر۔۔۔‘ کیا وجہ بنی؟ لڑکی کے والدین نے دولہا پر شرمناک ترین الزام لگادیا

’ہماری بیٹی کو اس کے شوہر نے ہنی مون پر قتل کروادیا کیونکہ اسے پتہ چل گیا تھا ...
’ہماری بیٹی کو اس کے شوہر نے ہنی مون پر قتل کروادیا کیونکہ اسے پتہ چل گیا تھا کہ وہ چھپ کر۔۔۔‘ کیا وجہ بنی؟ لڑکی کے والدین نے دولہا پر شرمناک ترین الزام لگادیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لندن(نیوز ڈیسک) بھارتی نژاد برطانوی لڑکی عینی کا دوران ہنی مون قتل برطانوی تاریخ کے چند مشہور ترین کیسز میں شامل ہو چکا ہے۔یہ نومبر 2010کی بات ہے کہ جب وہ اپنے خاوند شرین دوانی کے ساتھ جنوبی افریقہ میں ہنی مون کے لئے گئی ہوئی تھی تو پراسرار حالات میں اسے قتل کر دیا گیا۔

شرین اور عینی اپنی شادی کے دو ہفتے بعد ہنی مون کے لئے گئے تھے۔ ایک رات جب وہ ساحلی علاقے کی سیر کو جا رہے تھے تو دو غنڈوں نے ان کا راستہ روکا اور عینی کے سر میں گولی مار کر فرار ہو گئے۔ یہ عجیب قسم کی واردات تھی کیونکہ عموماً ایسے جرائم میں مرد کو لوٹنے کے بعد قتل کرنے اور خاتون کی عصمت دری کے واقعات پیش آتے رہتے ہیں لیکن یہاں ایسا کچھ نہیں ہوا۔ شرین کو لوٹا گیا نا قتل کیا گیا جبکہ عینی کی عصمت دری نہیں کی گئی بلکہ اسے قتل کر دیا گیا۔

اگرچہ جنوبی افریقہ میں یہ مقدمہ سالوں تک چلا اور شرین کے بارے میں کچھ انتہائی شرمناک انکشافات بھی سامنے آئے لیکن یہ ثابت نہیں ہوسکا کہ اس نے خود اپنی دلہن کو قتل کروایا تھا۔ مقتولہ کے والدین کو البتہ اس بات پر پورا یقین ہے کہ شرین ن ہی ان کی بیٹی کو قتل کروایا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ شرین ہم جنس پرست تھا اور شادی کے بعد عینی کو اس بات کا علم ہوا تھا۔ ہنی مون کے دوران جب اس نے شرین سے اس بارے میں سوالات کئے تو وہ بوکھلا گیا اور اپنا راز فاش ہونے کے خوف سے نئی نویلی دلہن کو ہی قتل کروا دیا۔ واردات کے پراسرار حالات بھی یہی ظاہر کرتے ہیں کہ یہ منصوبہ بندی کے ساتھ کیا گیا قتل تھا، اور مزید یہ کہ جنوبی افریقہ میں گرفتار ہونے والے دو ملزمان نے بھی شرین کے خلاف گواہی ، مگر اس کے باوجود عدم شواہد کی بناءپر یہ مقدمہ ختم کر دیا گیا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /برطانیہ