جسے اللہ رکھے اسے کون چکھے، مردہ بچی اچانک زندہ

جسے اللہ رکھے اسے کون چکھے، مردہ بچی اچانک زندہ
جسے اللہ رکھے اسے کون چکھے، مردہ بچی اچانک زندہ

  

واشنگٹن(ڈیلی پاکستان آن لائن)کہتے ہیں کہ ’’جسے اللہ رکھے اسے کون چکھے‘‘۔ وسطیٰ امریکہ کے ملک ہنڈورس میں 7 ماہ کی مردہ بچی کی دفنانے سے قبل اچانک سانسیں بحال ہوگئی۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق وسطیٰ امریکہ کا ملک ہنڈورس میں ایک انوکھا واقعہ پیش آیا۔ جہاں 7 ماہ کی بچی کی ماں کو ہسپتال انتظامیہ نے بتایا کہ اس کی بیٹی مار گئی ہے۔7 ماہ کی بچی کیلیئن جوہنا مونٹویا کو 3 اگست کو شدید ہائیڈریشن اور جلدی انفیکشن کی شکایات پر مقامی ہسپتال میں داخل کیا گیا تھا۔رپورٹ کے مطابق کیلیئن کو مقامی ہسپتال کے نرسری یونٹ میں زیر علاج تھی۔ 3 روز کے بعد پیر کی صبح 9 بجے کیلیئن کی ماں لیوس کو بتایا گیا کہ اب اس کی بیٹی اس دنیا میں نہیں رہی اور ہسپتال نے اس کا ڈیٹھ سرٹیفکیٹ بھی جاری کردیا۔بچی کی ماں اپنے ٹوٹے دل اور دکھ میں مردہ بیٹی کو ہسپتال سے لے کر اپنے رشتہ دار کے گھر چلی گئی۔بچی کی ماں لیوس مونٹویا نے کہا کہ میرے پاس گھر جانے کے پیسے نہیں ہیں۔اس کے بعد رات کو کیلیئن کی میت ڈاس کیمنوس کے پاس واقع ایک چرچ میں لے گئے۔ لیوس کے مطابق اس کی 7 ماہ کی بیٹی کی میت ایک کرسی پر رکھی تھی کیونکہ پیسے نہ ہونے کی وجہ سے وہ تابوت کا انتظام نہیں کر سکے تھے۔ اس لمحے لیوس نے محسوس کیا کہ اس کی بیٹی کی سانسیں چل رہی ہے۔ جس کے بعد کیلیئن کو مقامی کلینک میں لے جایا گیا جہاں اسے آئی سی یو میں رکھا گیا ہے۔کلینک انتظامیہ کا کہنا ہے کہ کیلیئن کی حالت ابھی تشویشناک ہے، اس کا علاج کیا جارہا ہے تاہم ابھی کچھ بھی نہیں کہا جاسکتا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس