مسلمانوں کے زوال کی وجہ قرآنی تعلیمات سے دوری ہے،مشتاق احمد

  مسلمانوں کے زوال کی وجہ قرآنی تعلیمات سے دوری ہے،مشتاق احمد

  

شیرگڑھ (نامہ نگار) جماعت اسلامی کے صوبائی امیر سینیٹر مشتاق احمد خان نے کہا ہے کہ مسلمانوں کے زوال کا اصل سبب قرآنی تعلیمات سے دوری اور عصری علوم سے ناواقفیت ہے پرائیویٹ تعلیمی ادارے نئی نسل کو اپنی دین،عقیدہ،تاریخ،ثقافت، روایات اور جدید عصری علوم سے روشناس کرائیں نئی نسل میں چھپی ہوئی صلاحیتوں کو ابھارے اور سائنس و ٹیکنالوجی میں اتنامہارت سکھائے کہ دوسری قومیں ان سے پیچھے رہ جائے اقوام عالم کی ترقی کاراز جدید علوم کے حصول میں مضمر ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز پڑاو جلالہ میں اسوہ انٹر نیشنل گرلز ڈگری کالج کے افتتاحی تقریب سے اپنے خطاب میں کیا تقریب سے جماعت اسلامی ضلع مردان کے امیر مولانا سلطان محمد،اسوہ انٹرنیشنل کے ڈائریکٹر غلام رسول،پرنسپل فضل معبود اور جماعت اسلامی کے صوبائی جنرل سیکرٹری عبد الواسع نے بھی خطاب کیا اس موقع پر سابق صوبائی وزیر فضل ربانی ایڈوکیٹ،سابق ایم پی اے میاں نادرشاہ،تنظیم اساتذہ ضلع مردان کے صدر اختر حسین،مولانا عبد البر،مولانا صفی اللہ،تخت بھائی بار کے صدر فرمان علی ایڈوکیٹ،بار کے سابق صدر قمر زمان ایڈوکیٹ،کسان بورڈ کے محمدنور،غفور خان اورحاجی نور محمد بھی موجود تھے انہوں نے کہا کہ دنیا کے جتنے ملکوں نے ترقی کی ہے انہوں نے اپنی نئی نسل کو اپنی زبان میں تعلیم دی ہے جبکہ بد قسمتی سے پاکستان  نے روز اول سے نئی نسل کو  غیروں کی زبان میں تعلیم دینا شروع کیا ہے جو ہماری زوال کا سبب بنی ہوئی ہے  انہوں نے کہا کہ تعلیم کو قومی زبان میں دی جائے تعلیمی نظام نظرئیے اور ضروریات کے مطابق بنائی جائے انہوں نے کہا کہ اس وقت اسلامی دنیا میں 73کروڑ خواتین ان پڑھ اور نا خواندہ ہیں جو ہماری نئی نسل کی پرورش کرتا ہے حالانکہ اسلام ہمیں بتاتی ہے کہ علم حا صل کرنا ہر مرد اور عورت پر فرض ہے اور اسلام نے جتنے حقوق خواتین کو دئیے ہے کسی اور مذہب نے نہیں دئیے انہوں نے کہا کہ نئی نسل کو تعلیم کے ساتھ ساتھ بہترین تربیت اور اپنی دین،ثقافت اور اقدار سے واقفیت بھی دلائے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -