ٹانک،موٹر سائیکل سواروں کی فائرنگ سے سپیشل برانچ کے اے جی او جاں بحق 

  ٹانک،موٹر سائیکل سواروں کی فائرنگ سے سپیشل برانچ کے اے جی او جاں بحق 

  

ٹانک(نمائندہ خصوصی)ٹانک کے گنجان آباد علاقہ اللہ جان سر ائے کے قریب بازار میں نامعلوم مسلح موٹر سائیکل سواروں نے فا ئرنگ کر کے ٹانک اسپیشل برانچ کے اے جی او آمیر آعظم کو شہید کر دیا ملزمان فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے سی ڈی پولیس نے دہشت گردی کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کر لیا بازار میں چند فرلانگ کے قریب پولیس چوکی کی موجودگی میں ایک اہم صوبائی ادارے کے پولیس افسر کو قتل کر کے ملزمان کا فرار ہو جانا دوسالوں سے تعینات ڈی پی او کی کاکرکردگی پر سوالیہ نشان ہے؟ ذرائع کے مطابق اتوار کی شب تقریبا آٹھ بجے کے قریب اسپیشل برانچ ٹانک کے اے جی او اسسٹنٹ سب انسپکٹر امیر اعظم شاہ موٹر سائیکل پر سوار ہوک آفس سے اپنے گھر کی طرف جارہے تھے کہ سرائے اللہ جان کے قریب پہلے سے  تاک میں موجود نامعلوم مسلح موٹر سائیکل سواروں نے ان پر فائرنگ شروع کر دی گولیاں سر میں لگنے کی وجہ سے وہ جانبر نہ ہو سکے اور شہید ہو گئے جبکہ ملزمان موٹرسائیکل پر سوار ہو کر فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے جس مقام پر اے ایس آئی کو شہید کیا گیا اس سے چند قدموں کے فاصلہ پر پولیس کی چوکی بھی موجود ہے شہید میر آعظم شاہ کی نماز جنازہ پہلے تھانہ مرید اکبر شہید میں ادا کی گئی جس میں فوج،ضلعی انتظامیہ،پولیس اور اسپیشل برانچ کے حکام سمیت جوانوں نے شرکت کی اس موقع پر پولیس کے دستے نے شہید کی میت کو سلامی دی فوج اور پولیس حکام کی جانب سے میت پر پھولوں کی چادریں چڑھائیں گئیں جس کے بعد ٹانک کا سپورٹس اسٹیڈیم میں بھی شہید کی نماز جنازہ ادا کی گئی جس میں شہریوں اور معززین علاقہ کی بہت بڑی تعداد نے شرکت کی نماز جنازہ کی ادائیگی کے بعد شہید کی میت کوعلاقائی لنگر بائی قبرستان میں پورے سرکاری اعزاز کے ساتھ سپرد خاک کر دیا گیا ادھر سی ٹی ڈی پولیس نے شہید اے ایس آئی کے قتل کا مقدمہ دہشت گردی کی دفعات کے تحت درج کرکے تفتیش شروع کر دی ہے،دریں اثناء اختر حیات گنڈہ پور اے آئی جی سپیشل برانچ کی ٹانک میں شہید ہونے والے سپیشل برانچ کے اے ایس آئی امیراعظم شاہ کے گھر آمد لواحقین  کے ساتھ فاتحہ خوانی کی اورانہیں ہر قسم کے تعاون کی یقین دہانی کرائی.جبکہ انہوں نے اس موقع پر شہیدکے بیٹے کو پولیس میں اے ایس آئی بھرتی کرنے اور شہید پیکج دینے کا اعلان کیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -