انڈس موٹر کا 5.1 بلین روپے بعد ازٹیکس منافع کا اعلان

  انڈس موٹر کا 5.1 بلین روپے بعد ازٹیکس منافع کا اعلان

  

 کراچی(پ ر)انڈس موٹر کمپنی (آئی ایم سی) کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کا اجلاس 10 اگست، 2020 کو منعقد ہوا جس میں 30 جون 2020 کو اختتام پذیر مالی سال کیلئے کمپنی کی مالیاتی اور  پیداواری کارکردگی کا جائزہ لیا گیا۔30جون، 2020 کو اختتام پذیر مالی سال کیلئے کمپنی کا خالص منافع86 بلین روپے رہا جو گزشتہ سال کی اسی مدت کے158بلین روپے کے مقابلے میں 46  فیصد کم رہا جبکہ بعداز ٹیکس منافع63 فیصد کمی کے ساتھ گزشتہ سال کے 13.7 بلین روپے کے مقابلے میں 5.08 بلین روپے رہا۔کمپنی نے سال کے دوران قومی خزانے میں 35.9 بلین روپے کا حصہ رسد کیا.آمدن اور منافع میں کمی کی بڑی وجوہات میں مشکل معاشی صورتحال، ٹیکسوں اور ڈیوٹیز کا نفاذ اور کورونا وائرس کی وبا کے نتیجہ میں نافذ کردہ لاک ڈاؤن شامل ہیں۔ ٹویوٹا سی کے ڈی اور سی بی یو گاڑیوں کی مشترکہ فروخت 28,837 یونٹس رہی جبکہ گزشتہ 66,211یونٹس فروخت ہوئے صنعت جو پہلے ہی معاشی پالیسیوں کے عدم تسلسل کی وجہ  سے دباؤ کا شکار تھی، کورونا وائرس کی وبا کے نتیجہ میں اضافی چیلنج کا سامنا کرنا پڑا۔ ٹیکسوں کی بلند شرح، جی ڈی پی کی شرح میں کمی، روپے کی قدر میں مسلسل گراوٹ اور کورونا وائرس کی وبا کے نتیجہ میں نافذ کردہ لاک ڈاؤن کے آٹوموٹو انڈسٹری کی پیداواری صلاحیت پر مجموعی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔،  پاماکے ڈیٹا کے مطابق، کھپت میں تاخیر کے سبب آٹو سیکٹرمالی سال 2019-2020 کے آخری سہ ماہی میں بحال نہ ہوسکا، اپریل اور مئی 2020 سب سے مشکل ترین مہینے ثابت ہوئے جبکہ اپریل 2020 میں مسافر گاڑیوں کی فروخت زیرو رہی

 علی اصغر جمالی، سی ای او آئی ایم سی نے کہا ”آئی ایم سی پاکستانی مارکیٹ  اور اپنے صارفین کیلئے ہمیشہ سے پرعزم ہے اور رہے گا جن کی ہماری مصنوعات میں دلچسپی اور اعتماد  میں ہر سال تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔ یہ ہمارے صارفین کی حمایت اور ہم پر اعتماد کی وجہ سے ہی ممکن ہے کہ آئی ایم سی عالمی وبا  جس سے مجموعی طور پر معیشت سست روی کا شکار ہوگئی، کے دوران بھی اپنے صارفین کو بہتر سے بہتر مصنوعات کی فراہمی کیلئے تند ہی سے کام کر رہا ہے۔“

 کمپنی نے  مارچ 2020 میں کرولا 1.3L گاڑیوں کی فروخت بند کردی  جس نے 25 سال تک مارکیٹ میں اپنی قائدانہ حیثیت برقرار رکھی۔ فلیگ شپ کرولا برانڈ 1.6L اور 1.8L سیگمنٹ کی دنیا بھر میں فروخت جاری رہے گی ۔ کمپنی نے 19 مارچ، 2020کو نئے دور کے شاہکار ماڈل ٹویوٹا یارسToyota Yaris  کی 1.3L اور1.5Lویرئنٹس  کے ساتھ بکنگ کا آغاز کیا۔ ملک میں مکمل لاک ڈاؤن کی وجہ سے مارکیٹنگ کے حوالے سے کسی سے قسم کی سرگرمیاں منعقد نہیں کی گئیں لیکن اس کے باوجودصارفین کی طرف سے ٹویوٹا یارس کو بہت زیادہ سراہا گیا۔

 ان نتائج کی بنیاد پر بورڈ آف ڈائریکٹرز  نے7 روپے فی حصص کے حتمی ڈیویڈنڈ کا اعلان کیا جبکہ سال کیلئے سالانہ ڈیویڈنڈ30 روپے فی حصص رہا۔

مزید :

کامرس -