چین کاجوابی ردعمل، امریکی سینیٹرزاور کئی اعلیٰ عہدیداروں پر پابندی کا اعلان

چین کاجوابی ردعمل، امریکی سینیٹرزاور کئی اعلیٰ عہدیداروں پر پابندی کا اعلان

  

بیجنگ (مانیٹرنگ ڈیسک)چین نے اعلان کیا ہے کہ ہانگ کانگ کے معاملے پر امریکہ کے جواب میں سینیٹرز سمیت 11 اعلیٰ عہدیداروں پر پابندی عائد کردی۔چین کے دفترخارجہ کے ترجمان ژاؤ لی جان نے بریفنگ کے دوران کہا کہ امریکہ کے اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کی جانب سے چینی حکومت کے 11 عہدیداروں پر پابندی ہانگ کانگ اور چین کے اندرونی معاملات میں کھلی مداخلت ہے۔امریکہ کے اس طرح کے اقدامات بین الاقومی قانون اور بنیادی عالمی اقدار کی کھلم کھلا خلاف ورزی اور چین اس کو یکسر مسترد اور مذمت کرتا ہے۔ترجمان چینی وزارت خارجہ نے کہاامریکہ کے غلط قدم کے جواب میں چین نے امریکہ کے سینیٹرز اور دیگر عہدیداروں پر ہانگ کانگ کے معاملات میں قابل مذمت کردار ادا کرنے پرپابندی کا فیصلہ کرلیا ہے،اس پابندی کا اطلاق آج سے ہوگا۔چینی پابندی کا شکار ہونیوالے افراد میں 5 امریکی سینیٹرز مارکو روبیو، ٹیڈ کروز، جوش ہاؤلے، ٹومکوٹن اور پیٹ ٹومی،دیگر اعلیٰ عہدیداروں میں نیشنل انڈوومنٹ فار ڈیموکریسی، نیشنل ڈیموکریٹک انسٹی ٹیوٹ، انٹرنیشنل ری پبلکن انسٹی ٹیوٹ کے صدور اور ہیومن رائٹس واچ کے ایگزیکٹیو ڈائریٹر اور فریڈم ہاؤس کے صدر شامل ہیں۔ژاؤ لی جان نے کہا میں زور دے کر کہوں گاہانگ کانگ میں ایک ملک دو نظام کامیاب ہے، شہری مثالی جمہوریت اور قانون کے مطا بق حقوق اور آزادی سے محظوظ ہورہے ہیں، یہ ایک حقیقت ہے جس کو کوئی بھی غیرجانبدار شخص نہیں جھٹلا سکتا۔

چین پابندی اعلان

مزید :

صفحہ اول -