محرم الحرام: اسلام اور پاکستان دشمن قوتوں کوناکام بنانے کیلئے درس کربلا پر عمل کرناہو گا: فضل الرحمن 

محرم الحرام: اسلام اور پاکستان دشمن قوتوں کوناکام بنانے کیلئے درس کربلا پر ...

  

ڈیرہ اسماعیل خان(بیورورپورٹ)جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ محرم الحرام میں اسلام دشمن اور پاکستان دشمن قوتوں کی سازشوں کو ناکام بنانے کیلئے تعلیمات محمدیﷺ اور درس کربلا کو مدنظر رکھنا اور اس پر عمل کرنا انتہائی ضروری ہے۔ ڈیرہ اسماعیل خان امن جرگہ کے سرکردہ رہنما معروف سماجی سیاسی شخصیت اور مرکزی انجمن تاجران کے صدر راجہ اختر علی سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ماضی کی فرقہ واریت نے اس شہر کے باسیوں کو انمٹ زخم اور ناقابل تلافی نقصان پہنچایا ہے۔ یہ عدم برداشت فرقہ واریت کا ہی نتیجہ تھا کہ اسی کی دہائی میں ملک بھر میں فرقہ وارانہ فسادات میں ڈیرہ اسماعیل خان سر فہرست آنے لگا خدا کے فضل وکرم سے ہم نے1991 میں مقامی انتظامیہ، اہل تشیع اور اہلسنت اکابرین کو ایک پلیٹ فارم پر اکھٹا کیا اور تاریخی معاہدہ کرایا جسکے ثمرات یہاں سے فرقہ واریت کے خاتمہ کی صورت میں آج تک موجود ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جو قوتیں پاکستان کے استحکام یہاں جمہوریت کے فروغ اور عالم اسلام کو ختم کرنے کی درپے ہیں وہ فرقہ واریت کو ہوا دیکر اپنے مذموم مقاصد کی تکمیل کی سازشوں میں ہمیشہ مصروف رہتی ہیں محرم الحرام کے ایام میں بھی اسلام دشمن پاکستان دشمن قوتیں اپنے مذموم ایجنڈا کی تکمیل کیلئے متحرک ہوجاتی ہیں جنکے عزائم کی ناکامی میں عوام کا اتحاد۔ ایک دوسرے کے عقائد کااحترام اور دوسرے کے جذبات کو ابھارنے والے اقدامات سے کنارہ کشی کی صورت میں ممکن ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈیرہ اسماعیل خان میں اہلسنت اور اہل تشیع اکابرین کے باہمی رابطے سابقہ معاہدات پر عمل درآمد اور اشتعال انگیز الفاظ حرکات و سکنات سے گریز وقت کی اہم ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ عقیدہ ختم نبوتﷺ، اہل بیت عظام، عشرہ مبشرہ اور اصحاب رسولﷺ کی عظمت شعائر اسلام کی سربلندی کیلئے مسلمان کسی بھی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کرتے۔ جذبہ حسینی آج بھی ہر مسلمان کے دل میں موجود ہے جس پر عمل پیرا ہونا انتہائی ضروری ہے، معرکہ کربلا میں اہلبیت نے اپنا سب کچھ لٹا کر انسانیت اور بالخصوص مسلمانوں پر جو احسان کیا اسکی نظیر دنیا کی تاریخ میں نہ ملی ہے اور نہ مل سکتی ہے۔

مزید :

صفحہ اول -