عمر اکمل کا معاملہ کھیلوں عالمی ثالثی عدالت میں لے جانے پر پی سی بی کو کتنا خرچہ کرنا پڑے گا؟ ناقابل یقین تفصیلات سامنے آ گئیں

 عمر اکمل کا معاملہ کھیلوں عالمی ثالثی عدالت میں لے جانے پر پی سی بی کو کتنا ...
 عمر اکمل کا معاملہ کھیلوں عالمی ثالثی عدالت میں لے جانے پر پی سی بی کو کتنا خرچہ کرنا پڑے گا؟ ناقابل یقین تفصیلات سامنے آ گئیں

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے مڈل آرڈر بلے باز عمر اکمل کی سزا میں کمی کے فیصلے کیخلاف معاملے کو کھیلوں کی عالمی ثالثی عدالت میں لے جانے کا فیصلہ کیا ہے اور ذرائع کا کہنا ہے کہ اس پر بورڈ کو کم از کم 50 لاکھ روپے خرچ کرنا ہوں گے۔ 

تفصیلات کے مطابق پی سی بی کی جانب سے ڈومیسٹک کیس کو عالمی سطح پر لے جانے کے فیصلے پر حیرت بھی ظاہر کی جا رہی ہے۔ پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) 5 شروع ہونے سے قبل عمر اکمل کو اینٹی کرپشن کوڈ کی خلاف ورزی پر معطل کر دیا گیا تھا، کرپشن کی پیشکشوں کے حوالے سے رپورٹ نہ کرنے پر پی سی بی کی ڈسپلنری کمیٹی کے سربراہ جسٹس ریٹائرڈ فضل میران چوہان نے اپریل میں ان پر تین سالہ پابندی عائد کر دی تھی جبکہ مئی میں عمر اکمل نے فیصلے کیخلاف اپیل دائر کر دی اور پھر جولائی میں جسٹس ریٹائرڈ فقیر محمد کھوکھر نے اپیل پر فیصلہ سناتے ہوئے ان کی سزا آدھی کر دی۔ 

ذرائع کے مطابق پی سی بی نے بطور غیرجانبدار ایڈجوڈیکیٹر9 ریٹائرڈ ججز کی خدمات حاصل کی ہوئی ہیں جن میں سے ایک سپریم کورٹ اور8 ہائیکورٹ کے ریٹائرڈ ججز ہیں، نومینیشن کمیٹی ان کا تقرر کرتی اور بورڈ باقاعدہ لیٹر بھی جاری کرتا ہے جبکہ انہیں فی کیس 2 لاکھ روپے دئیے جاتے ہیں، کسی اپیل کے وقت دونوں پارٹیز ایک، ایک لاکھ روپے جمع کراتی ہیں۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ پی سی بی کی ڈسپلنری کمیٹی کے سربراہ نے عمر اکمل پر پابندی لگائی اور پھر بورڈ ہی کے غیرجانبدار ایڈجوڈیکیٹر نے سزا آدھی کر دی تاہم اب پی سی بی ہی فیصلے کو سوئٹرز لینڈ میں کھیلوں کی ثالثی عدالت میں چیلنج کرے گا۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ اس کیس پر پی سی بی کے کم از کم50 لاکھ روپے خرچ ہوں گے، یہ رقم اس سے دگنی بھی ہو سکتی ہے، کیس کی پیروی کیلئے کسی غیرملکی قانونی فرم سے رابطہ کیا جائے گا۔

مزید :

کھیل -